دبئی: آسٹریلیا نے پاکستان کو پانچ میچوں کی سیریز میں وائٹ واش کر دیا

تصویر کے کاپی رائٹ PCB

آسٹریلیا نے پانچ میچوں کی ایک روزہ سیریز کے آخری میچ میں عثمان خواجہ اور میکسویل کی شان دار بلے بازی کی بدولت پاکستان کو 21 رنز سے شکست دے کر سیریز میں کلین سوئپ کر دیا ہے۔

آسٹریلیا نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے پاکستان کو جیت کے لیے 328 رنز کا ہدف دیا جس کے جواب میں پاکستان نے سات وکٹوں کے نقصان پر 307 رنز بنائے۔

کپتان عماد وسیم کی تیز رفتار نصف سنچری بھی پاکستان کے کام نہ آ سکی اور پاکستانی ٹیم مسلسل پانچواں میچ بھی ہار گئی۔

میچ کا تفصیلی سکورکارڈ

شان مسعود بھی نصف سنچری بنانے کے بعد ایڈم زیمپا کی گیند پر ایل بی ڈبلیو قرار پائے۔ عمر اکمل آؤٹ ہونے والے چوتھے کھلاڑی تھے جو 43 رنز کی اننگز کھیل کر نیتھن لائن کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوئے۔

محمد رضوان 12 رنز بنا کر گلین میکسویل کی گیند پر کیچ آؤٹ ہو گئے۔

حارث سہیل نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 103 گیندوں پر اپنی سنچری مکمل کی اور 130 رنز بنا کر کین رچرڈسن کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوگئے۔

آسٹریلیا کی جانب سے جیسن بیہرینڈوف سب سے نمایاں بولر رہے اور انھوں نے 63 رنز کے عوض تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

یہ بھی پڑھیے

’محمد رضوان کے لیے یہ عجیب سا دن تھا‘

’یہ ٹیم پاکستان کے لیے نہیں کھیل رہی‘

دبئی: چوتھے ون ڈے میں بھی آسٹریلیا کی جیت

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

آسٹریلیا کی اننگز

عثمان خواجہ نے شاندار بیٹنگ کی اور گراؤنڈ کے چاروں جانب دلکش سٹروکس کھیلے۔ انھوں نے اپنی نصف سنچری 48 گیندوں میں مکمل کی مگر وہ اپنی سنچری بنانے میں کامیاب نہ ہوسکے اور 98 رنز بنانے کے بعد عثمان شنواری کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوئے۔

مارکس سٹوئنس، پیٹر ہینڈس کومب اور ایلیکس کیری متاثر کن بلے بازی نہ کر پائے اور جلد ہی پویلین واپس لوٹ گئے۔

گلین میکسویل نے جارحانہ اننگز کھیلتے ہوئے صرف 26 گیندوں پر اپنی نصف سنچری مکمل کی انھیں جنید خان نے 70 کے سکور پر بولڈ کیا۔ شان مارش نے بھی اچھی اننگز کھیلی اور 53 گیندوں پر اپنے نصف سنچری مکمل کی مگر جنید خان کی گیند پر 61 رنز بنا کر کیچ آؤٹ ہوگئے۔

آسٹریلیا کے پہلے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی ایرون فنچ نے عثمان خواجہ کا بھرپور ساتھ دیا اور انھوں نے اپنی نصف سنچری 61 گیندوں پر مکمل کی مگر وہ 53 رنز بنا کر عثمان شنواری کی گیند پر بولڈ ہوئے۔

پاکستان کی جانب سے عثمان شنواری نے عمدہ بولنگ کرتے ہوئے اپنے 10 اوورز میں 49 رنز کے عوض چار کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی۔ جنید خان نے بھی تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا مگر باقی بولرز کی طرح کافی مہنگے ثابت ہوئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

اسی بارے میں