کرکٹ میں انقلابی تبدیلیاں، آئی سی سی کا اپریل فول؟

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ Icc

کرکٹ کے کھلاڑیوں کو انٹرنیشنل میچز کے دوران اب آپ نیکر میں کھیلتے دیکھ سکتے ہیں، اب کرکٹ میں ٹاس نہیں ہوگا بلکہ ٹوئٹر کے صارفین فیصلہ کریں گے کہ کون سی ٹیم پہلے بیٹنگ کرے گی۔

عالمی ادارے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے ٹوئٹر پر پیر کی صبح جب یہ اور اس جیسی دیگر باتیں کیں تو تبصروں کا ایک طوفان آ گیا مگر پھر صارفین کو خیال آیا کہ آج تو یکم اپریل ہے۔

ان اعلانات کے ساتھ آئی سی سی نے ہیش ٹیگ 'کرکٹ ناٹ ایز یو نو' کا استعمال بھی کیا ہے جس کا مطلب ہے کہ 'جیسی کرکٹ آپ جانتے ہیں ویسی نہیں'۔

اپنے پہلے ٹویٹ میں آئی سی سی نے لکھا وہ ورلڈ ٹیسٹ چیمپیئن شپ سے قبل کچھ تبدیلیاں لا رہا ہے جس میں نوجوان نسل کے لیے کرکٹ کو مزید دلچسپ بنانے پر توجہ مرکوز کی گئی ہے۔

تنظیم کے مطابق اب کھلاڑیوں کی جرسی پر نہ صرف نمبرز ہوں گے بلکہ ان کے انسٹاگرام ہینڈلز بھی ہوں گے۔

یہ بھی پڑھیے

کرکٹ کے نئے قوانین تیار،اطلاق یکم اکتوبر سے

ارائیں بچے کا دل وحشی ہوگیا

آئی سی سی نے اپنے دوسرے ٹویٹ میں لکھا ہے کہ 'ورلڈ ٹیسٹ چیمپیئن شپ سے قبل مزید تبدیلیوں میں سکے اچھالنے کی جگہ ٹوئٹر پول ہوں گے جس میں کرکٹ کے مداحوں کو گھر بیٹھے یہ سہولت حاصل ہوگی کہ وہ اس میں شریک ہوکر یہ فیصلہ کریں کہ کون سی ٹیم بولنگ کرے اور کون سی بیٹنگ۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Icc

تیسرے ٹویٹ میں کہا گیا کہ اگر میدان میں درجۂ حرارت 35 ڈگری سینٹی گریڈ پہنچ جاتا ہے یا اس سے زیادہ ہوتا ہے تو ٹیسٹ کھلاڑیوں کو یہ اختیار ہوگا کہ وہ نیکر یا شارٹس پہن سکیں۔

اس کے علاوہ یہ بھی کہا گیا ہے کہ ناظرین کو کرکٹ سے مزید قریب لانے کے لیے کمنٹیٹرز کو میدان میں سلپ کے پیچھے کھڑا کیا جا سکتا ہے۔

یہی نہیں بلکہ یہ بھی کہا گیا کہ اب ایک ہی بار میں دو کھلاڑی آؤٹ کیے جا سکتے ہیں۔ یعنی فیلڈنگ ٹیم اگر کیچ پکڑ لیتی ہے اس کے بعد اسے یہ اختیار ہوگا کہ وہ رن لیتے ہوئے بیٹسمین کو رن آؤٹ کر بھی دے۔

یہی نہیں بلکہ ڈے اور نائٹ ٹیسٹ میچز میں شام کے بعد رنز دوگنے ہو جائیں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Icc

یہ پیغامات سامنے آتے ہی ان پر تبصروں کا سلسلہ شروع ہو گیا اور جہاں کچھ صارفین نے فوراً ہی اس کا تعلق اپریل فول سے جوڑ لیا وہیں کچھ ان پیغامات کو حقیقت پر مبنی سمجھ بیٹھے۔

ایسے ہی ایک صارف نے کہا ’تبدیلی تو ٹھیک ہے لیکن اسے معیار سے نیچے نہ لے جایا جائے۔‘ کسی نے لکھا کہ جرسی پر انسٹاگرام ہینڈل تو قابل قبول ہے لیکن ٹاس کی جگہ ٹوئٹر قبول نہیں۔

تاہم ایک ٹوئٹر صارف نے لکھا کہ 'آئی سی سی آج ترنگ میں ہے۔ اپریل فول پر اپریل فول بنا رہی ہے۔'

کچھ صارفین نے تو جیسے کو تیسا کے مصداق آئی سی سی کو ہی مشورے دے ڈالے۔ ایک صارف نے کہا کہ ٹیسٹ میچ کے آخری دن جب کھلاڑی تھک جائیں تو ناظرین کھیل کے فائنل سیشن میں کھیل سکتے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں