2019 کرکٹ ورلڈ کپ سکواڈ: عامر آؤٹ، حسنین ان

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

کھلاڑیوں کے ناموں کا اعلان چیف سلیکٹر انضمام الحق نے جمعرات کی شام قذافی اسٹیڈیم لاہور میں پریس کانفرنس میں کیا۔

کون انگلینڈ کی پرواز پر سوار ہوگا

فاسٹ بولر محمد عامر سلیکشن کے مشاورتی ٹرائیکا کا اعتماد حاصل کرنے میں کامیاب نہیں ہوسکے ہیں ان کے سابقہ تجربے پر ان کی موجودہ خراب فارم حاوی ہوکر انہیں ٹیم میں جگہ دلانے میں کامیاب نہیں ہوسکی ہے۔

محمد عامر کو آصف علی کے ساتھ ورلڈ کپ سے قبل انگلینڈ کے خلاف ہونے والی محدود اوورز کی سیریز کے لیے منتخب کیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ محمد عامر نے دو سال قبل چیمپینز ٹرافی کے فائنل میں تین وکٹوں کی میچ وننگ کارکردگی کے بعد سے ابتک چودہ ون ڈے انٹرنیشنل میچوں میں صرف پانچ وکٹیں حاصل کی ہیں جن میں سے نو میچز ایسے ہیں جن میں انہیں ایک بھی وکٹ نہیں مل سکی ہے ۔ مکی آرتھر محمد عامر کے سلیکشن کے حق میں دکھائی دیے تھے جس کا اظہار وہ آسٹریلیا کے خلاف سیریز کے موقع پر پریس کانفرنس میں بھی کہا تھا کہ محمد عامر بڑے میچ کے بڑے کھلاڑی ہیں لیکن سلیکشن کمیٹی کا فیصلہ ان کے خلاف گیا۔

پاکستانی ٹیم کے کھلاڑی

ٹیم میں پانچ کھلاڑی کپتان سرفراز احمد ۔ شعیب ملک ۔محمد حفیظ جنید خان اور حارث سہیل ایسے ہیں جنہیں اس سے قبل بھی ورلڈ کپ کھیلنے کا تجربہ ہے۔

دس کھلاڑی پہلی بار ورلڈ کپ میں پاکستان کی نمائندگی کریں گے۔

پاکستانی ٹیم ان کھلاڑیوں پر مشتمل ہے۔ سرفراز احمد ( کپتان ) ۔ فخرزمان۔ امام الحق۔ بابراعظم۔ حارث سہیل۔محمد حفیظ۔ شعیب ملک۔ شاداب خان۔ حسن علی۔ شاہین شاہ آفریدی۔محمد حسنین۔ عماد وسیم۔ فہیم اشرف۔ عابدعلی اور جنید خان۔

چیف سلیکٹر انضمام الحق کیا کہتے ہیں؟

پاکستان کرکٹ بورڈ کی سلیکشن کمیٹی کے سربراہ انضمام الحق نے ٹیم کا اعلان کرتے ہوئے تسلیم کیا کہ آل راؤنڈڑ عماد وسیم نے فٹنس ٹیسٹ پاس نہیں کیا لیکن کچھ کھلاڑی ایسے ہوتے ہیں جن کے لیے لچک دکھانی پڑتی ہے۔

انضمام الحق کا کہنا ہے کہ محمد حفیظ کی ٹیم میں شمولیت فٹنس سے مشروط ہے ۔انہوں نے اگرچہ فٹنس ٹیسٹ پاس کرلیا ہےلیکن پی ایس ایل میں انگوٹھا زخمی ہونے کے بعد سے وہ کوئی میچ نہیں کھیلے ہیں۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم 23 اپریل کو انگلینڈ روانہ ہوگی جہاں وہ کینٹ۔ نارتھمپٹن شائر اور لیسٹر شائر کے خلاف وارم اپ میچ کھیلنے کے بعد انگلینڈ کے خلاف 5 مئی کو کارڈف میں ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کھیلے گی۔

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان پانچ ون ڈے میچوں کی سیریز8 سے 19 مئی تک کھیلی جائے گی۔

ورلڈ کپ سے قبل پاکستانی کرکٹ ٹیم دو وارم اپ میچز بھی کھیلے گی جو 24 مئی کو افغانستان کے خلاف برسٹل اور 26 مئی کو بنگلہ دیش کے خلاف کارڈف میں ہونگے۔

یاد رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے کرکٹ کے عالمی کپ کی ٹیم میں شمولیت کے لیے تمام ممکنہ کھلاڑیوں کے فٹنس ٹیسٹ لیے تھے۔

بورڈ نے فٹنس ٹیسٹ میں شرکت کے لیے 23 کھلاڑیوں کے ناموں کا اعلان کیا تھا، جن میں آسٹریلیا کے خلاف ون ڈے سیریز میں حصہ لینے والی ٹیم کے علاوہ وہ چھ کھلاڑی بھی تھے جنھیں آسٹریلیا کے خلاف سیریز میں آرام کرایا گیا۔

ان کھلاڑیوں میں سرفراز احمد، فخر زمان، بابراعظم، شاداب خان، حسن علی اور شاہین شاہ آفریدی شامل تھے۔ ان کے علاوہ محمد نواز اور آصف علی کو بھی فٹنس ٹیسٹ کے لیے بلایا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیے

ورلڈ کپ کے لیے پاکستانی ٹیم میں کون جگہ بنا پائے گا

آسٹریلیا نے پاکستان کو وائٹ واش کر دیا

’یہ ٹیم پاکستان کے لیے نہیں کھیل رہی‘

پاکستان کرکٹ ٹیم بمقابلہ پاکستان کرکٹ بورڈ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

یاد رہے کہ محمد عامر نے دو سال قبل چیمپیئنز ٹرافی کے فائنل میں میچ وننگ کارکردگی کے بعد سے اب تک 14 ون ڈے میچوں میں صرف پانچ وکٹیں حاصل کی ہیں جن میں سے نو میچ ایسے ہیں جن میں انھیں ایک بھی وکٹ نہیں مل سکی ہے۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم 23 اپریل کو انگلینڈ روانہ ہو گی جہاں وہ کینٹ، نارتھمپٹن شائر اور لیسٹر شائر کے خلاف وارم اپ میچ کھیلنے کے بعد انگلینڈ کے خلاف پانچ مئی کو کارڈف میں ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کھیلے گی۔

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان پانچ ون ڈے میچوں کی سیریز آٹھ سے 19 مئی تک کھیلی جائے گی۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم ورلڈ کپ سے قبل دو وارم اپ میچ بھی کھیلے گی جو 24 مئی کو افغانستان کے خلاف برسٹل اور 26 مئی کو بنگلہ دیش کے خلاف کارڈف میں ہوں گے۔

اسی بارے میں