کرکٹ ورلڈ کپ 2019: ساتویں رینکنگ کی ٹیم بنگلہ دیش کی جنوبی افریقہ کو شکست

فاف ڈو پلیسی تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption کپتان فاف ڈو پلیسی نصف سنچری بنانے کے بعد پویلین لوٹ گئے

آئی سی سی ورلڈ کپ 2019 کے پانچویں میچ میں بنگلہ دیش نے جنوبی افریقہ کو 21 رنز سے شکست دی۔

جنوبی افریقہ کی ٹیم بنگلہ دیش کی طرف سے دیے گئے 331 رنز کے ہدف کا تعاقب نہیں کر پائی۔

مڈل آڈر میں لمبی پارنرشپ کی کمی، بنگلہ دیش کا پہاڑ جتنا سکور اور جنوبی افریقی بیٹنگ میں اعتماد کی کمی کی وجہ سے ساتویں رینکنگ کی ٹیم بنگلہ دیش نے تیسرے درجہ کی جنوبی افریقہ کو شکست دی۔ جنوبی افریقہ اس سے قبل انگلینڈ سے اپنا پہلا میچ بھی ہار چکا ہے۔

جنوبی افریقہ نے بیٹنگ کا آغاز محتاط انداز میں کیا اور پہلا نقصان انھیں 10ویں اوور میں کوئنٹن ڈی کاک کے رن آوٹ کی صورت میں اٹھانا پڑا۔ ایڈن مارکرام نے کپتان فاف ڈیوپلیسی کے ساتھ مل کر دوسری وکٹ کی پارٹنرشپ میں پچاس سے زیادہ رن بنائے اور سکور 102 پر پہنچا دیا لیکن وہ اپنی نصف سنچری پانچ رن کے فرق سے مکمل نہ کرسکے اور 45 کے انفرادی سکور پر بیسویں اوور میں آؤٹ ہوگئے۔

چھ اوورز کے وقفے کے بعد کپتان ڈیو پلیسی جو کہ بنگالی بولرز کو پر اعتماد طریقے سے کھیل رہے تھے، سپنر مہدی حسن کی گیند پر ایک غیر ضروری شاٹ کھیلنے کی کوشش میں بولڈ ہوگئے۔

ڈیوڈ ملر اور وین ڈر ڈسن نے پچپن رن کی شراکت کی تاہم رن ریٹ آٹھ رن سے اوپر چلے جانے کی صورت میں بیٹسمینوں پر دباؤ میں اضافہ ہوا جس کے بعد ملر مہدی حسن کی گیند پر باؤنڈری مارنے کی کوشش میں کیچ آوٹ ہوگئے۔

وین ڈر ڈسن نے نئے آنے والے کھلاڑی جے پی ڈومینی کے ساتھ مل کر 26 رنز بنائے لیکن دوسرے اینڈ سے باؤنڈری نہ لگنے کے بعد وہ بھی رن ریٹ کے دباؤ کا شکار ہوئے اور سیف الدین کی گیند پر ڈرائیو کی کوشش میں بولڈ ہوگئے۔

آل راؤنڈر جح پی ڈومینی نے پیچھے آنے والے بالروں کے ساتھ مل کر چھوٹی چھوٹی پارٹنرشپس کیں اور میچ کو جنوبی افریقہ کے حق میں لانے کی کوشش کی لیکن انھیں بھی خاطر خواہ کامیابی نہیں ملی۔ 48ویں اوور میں ڈومینی کے بولڈ ہونے کے ساتھ ہی جنوبی افریقہ کی رہی سہی امیدیں بھی ختم ہوگئیں۔ انھوں نے 45 رنز بنائے۔

میچ کا تفصیلی سکورکارڈ

اس سے قبل جب جنوبی افریقہ نے ٹاس جیت کر بنگلہ دیش کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی۔ بنگلہ دیش کی طرف سے مشفیق الرحیم نے 78 جبکہ شکیب الحسن نے 75 رنز کی شاندار اننگز کھیل کر بنگلہ دیش کی پوزیشن مستحکم بنا دی۔

ان دونوں کی 142 رنز کی شراکت داری سے پہلے اوپنر سومیا سرکار اپنی جارحانہ بلے بازی کی بدولت بنگلہ دیش کی رنز کی اوسط بڑھا چکے تھے۔ انھوں نے نو چوکوں کی مدد سے 30 گیندوں پر 42 رنز بنائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption شکیب، مشفیق پروٹیز پر حاوی

اننگز کے آخری اوورز میں جب ایک موقع پر بنگلہ دیش کی بیٹنگ لڑکھڑانے لگی تھی، ایسے میں محمود اللہ اور مصدق حسین نے جارحانہ انداز اپنایا اور مجموعی سکور کو 330 رنز تک پہنچا دیا۔

’یہ بھی پڑھیے

اس ورلڈ کپ میں صرف 10 ٹیمیں کیوں؟

دس بڑے کھلاڑی جو کرکٹ کا عالمی کپ نہ جیت سکے

سرفراز احمد اگر عمران خان بن گئے تو۔۔۔

وہ میچ جہاں سے کرکٹ ورلڈ کپ کا سلسلہ شروع ہوا

محمود اللہ نے تین چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 46 جبکہ مصدق حسین نے چار چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 26 رنز سکور کیے۔

جنوبی افریقہ کی طرف سے اینڈ لے فیفلکوایو، عمران طاہر اور کرس مارس نے دو دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔ جنوبی افریقہ نے خراب فیلڈنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے دو اہم کیچ چھوڑے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption جنوبی افریقہ کے لنگی نگیڈی اور کگیسو ربادا کی عمدہ بولنگ کے سامنے بنگلہ دیشی بلے بازوں نے پر اعتماد انداز میں بیٹنگ کی

پہلے پاور پلے میں بنگلہ دیش نے ایک وکٹ کے نقصان پر 65 رنز بنائے، جس میں سومیا سرکار کے آٹھ چوکوں کی مدد سے 36 رنز شامل تھے۔ اننگز کے نویں اوور میں اینڈلے فیفلکوایو نے اپنے پہلے ہی اوور میں تمیم اقبال کو آؤٹ کر دیا۔ ان کا کیچ وکٹ کیپر کوئنٹن ڈی کاک نے پکڑا۔

جبکہ ورلڈ کپ میں اپنا پہلا میچ کھیلنے والے آلراؤنڈر کرس مارس نے اپنے پہلے ہی اوور میں خطرناک اووپننگ بیٹسمین سومیا سرکار کو پویلین لوٹا دیا۔

میچ کے 36 ویں اوور میں جب ایسا لگ رہا کے شاید بنگلہ دیش مشفیق الرحیم اور شکیب الحسن کی بدولت ایک بڑا سکور بنانے میں کامیاب ہو جائے گا، لیکن ایسے میں عمران طاہر نے شکیب کو بولڈ کر دیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ @bbctms
Image caption شکیب اور مشقیق کی عمدہ شراکت

بنگلہ دیش کے چوتھے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی بھی عمران طاہر کا نشانہ بنے۔ محمد متھن نے شکیب الحسن والی غلطی دہرائی، اور عمران کو سویپ کرتے ہوئے بولڈ ہوئے۔

جنوبی افریقہ کے لنگی نگیڈی اور کگیسو ربادا کی عمدہ بولنگ کے سامنے بنگلہ دیشی بلے باز پر اعتماد انداز سے بیٹنگ کر رہے ہیں۔ میچ کے پانچویں اوور میں سرکار نے نگیڈی کے تیسرے اوورمیں تین چوکے مارے کر 14 رنز حاصل کیے۔

لیکن اسی اوور کے آخری اوور میں گیند پہلی اور دوسری سلپ میں کھڑے ایڈن مارکرم اور فاف ڈوپلیسی کے بیچ میں سے اڑتی ہوئی بونڈری لائن پار کر گئی۔ اس موقع پر جنوبی افریقہ کو یقیناً ہاشم آملہ کی محسوں ہوئی ہو گی، جو عام طور پر پہلی سلپ کے محفوظ فیلڈر ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ @bbctms
Image caption بنگلہ دیش کے چوتھے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی بھی عمران طاہر کا نشانہ بنے

جنوبی کی طرف سے ہاشم آملہ اس میچ میں زخمی ہونے والے کے باعث حصہ نہیں لے رہے۔ ہاشم آملہ انگلینڈ کے خلاف افتتاحی میچ میں ہیلمٹ پر جوفرا آرچر کی گیند لگنے سے زخمی ہوئے تھے۔

ان کی جگہ ٹیم میں بائیں ہاتھ سے جارحانہ بلے بازی کرنے والے ڈیوڈ ملر کو جگہ دی گئی ہے۔ جبکہ آلراؤنڈر ڈوین پریٹوریس کی جگہ کرس مارس نے ٹیم میں جگہ بنائی ہے۔

جنوبی افریقہ کی ٹیم کپتان فاف ڈوپلیسی، ایڈن مارکرم، کوئنٹن ڈی کاک (وکٹ کیپر)، رسی وین ڈر ڈسن، ڈیوڈ ملر، اینڈلے فیفلکوایو، جے پی ڈومنی، کگیسو ربادا، لنگی نگیڈی، عمران طاہر، تبریز شمسی اور کرس مورس پر مشتممل ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption مشفیق الرحیم کی نصف سنچری مکمل

جبکہ بنگلہ دیش کی ٹیم میں کپتان مشرفی مرتضیٰ، تمیم اقبال، سومیا سرکار، مشفیق الرحیم (وکٹ کیپر)، محموداللہ، شکیب الحسن، محمد متھن، مصدق حسین، محمد سیف الدین، مہدی حسن مراز اور مستفیظ الرحمٰن شامل ہیں۔

بنگلہ دیش آج اپنی ورلڈ کپ مہم کا آغاز کر رہی ہے جبکہ جنوبی افریقہ کو جمعرات کو کھیلے گئے افتتاحی میچ میں میزبان انگلینڈ کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اس میچ میں جنوبی کی طرف سے ہاشم آملہ انجری کے باعث حصہ نہیں لے رہے۔ ہاشم آملہ انگلینڈ کے خلاف افتتاحی میچ میں ہیلمٹ پر گیند لگنے سے زخمی ہوئے تھے

آئی سی سی کی درجہ بندی کی بات کی جائے تو جنوبی افریقہ تیسرے جبکہ بنگلہ دیش ساتویں نمبر پر موجود ہے۔ جنوبی افریقہ کی قیادت فاف ڈو پلیسی اور بنگلہ دیش کی ٹیم کی نمائندگی مشرفی مرتضیٰ کر رہے ہیں۔

یہ میچ اوول کے میدان پر کھیلا جا رہا ہے، جہاں بنگلہ دیش کو یہاں کھیلے گئے تینوں میچوں میں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

کرکٹ کے عالمی کپ میں دونوں ٹیمیں اب تک چار بار آمنے سامنے آ چکی ہیں جن میں سے تین مرتبہ فتح جنوبی افریقہ کے نام جبکہ ایک دفعہ بنگلہ دیش کے نام رہی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اننگز کے نویں اوور میں اینڈلے فیفلکوایو نے اپنے پہلے ہی اوور میں تمیم اقبال کو آؤٹ کر دیا

بنگلہ دیش نے یہ تاریخی فتح سنہ 2007 کے ورلڈ کپ میں 67 رنز سے حاصل کی تھی۔ بنگلہ کے بگ فور یعنی مشرفی مرتضیٰ، تمیم اقبال، شکیب الحسن اور مشفیق الرحیم بھی اس میچ کا حصہ تھے۔

ایک روزہ میچوں میں جنوبی افریقہ اور بنگلہ دیش کی ٹیمیں اب تک 20 مرتبہ مدِ مقابل آئی ہیں، جن میں سے 17 میچ جنوبی افریقہ جبکہ تین میچ بنگلہ دیش نے جیتے ہیں۔

جنوبی افریقہ اور بنگلہ دیش اب تک کسی بھی ورلڈ کپ کے فائنل تک رسائی حاصل کرنے میں ناکام رہے ہیں۔ جنوبی افریقہ اب تک تین بار ورلڈ کپ کے سیمی فائنل تک پہنچا ہے تاہم فائنل تک نہیں پہنچ سکا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption جنوبی افریقہ کی قیادت فاف ڈو پلیسی اور بنگلہ دیش کی ٹیم کی نمائندگی مشرفی مرتضیٰ کر رہے ہیں

ورلڈ کپ 2019 میں ان دو ٹیموں کے علاوہ دفاعی چیمپئین آسٹریلیا، میزبان انگلینڈ، افغانستان، نیوزی لینڈ، انڈیا، پاکستان، سری لنکا اور ویسٹ انڈیز حصہ لے رہی ہیں۔

یہ تمام ٹیمیں انگلینڈ اور ویلز کے 11 میدانوں پر مدِمقابل ہوں گی۔ پہلے مرحلے میں ساری ٹیم ایک دوسرے کے ساتھ ایک ایک میچ کھیلیں گی، جس کے بعد چار بہترین ٹیمیں سیمی فائنل کے لیے کوالیفائی کریں گی جبکہ عالمی کپ کا فائنل 14 جولائی کو لارڈز کے میدان پر کھیلا جائے گا۔

عالمی کپ کے ابتدائی چار میچ یک طرفہ رہے جن میں میزبان انگلینڈ، ویسٹ انڈیز، نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کامیاب رہے۔

اسی بارے میں