کرکٹ ورلڈ کپ 2019: چہل کی چار وکٹیں، روہت کی سنچری، جنوبی افریقہ کو لگاتار تیسری شکست

انڈین ٹیم تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption چہل کی چار وکٹوں اور روہت کی سنچری کی بدولت انڈیا نے جنوبی افریقہ کو چھ وکٹوں سے شکست دے دی

انگلینڈ اور ویلز میں کھیلے جانے والے آئی سی سی کرکٹ ورلڈ کپ کے ساتویں دن بدھ کو انڈیا نے جنوبی افریقہ کو چھ وکٹوں سے شکست دے کر عالمی کپ میں اپنی مہم کا فاتحانہ آغاز کر دیا۔

میچ میں کیا ہوا

ساؤتھیمپٹن کے ہیمپشائر باؤل میں کھیلے جانے والے اس میچ میں جنوبی افریقہ نے انڈیا کے خلاف ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا جو اسے مہنگا پڑا۔ مقررہ 50 اوورز میں جنوبی افریقہ صرف 227 رنز ہی بنا سکی۔

جنوبی افریقہ کی طرف سے کرس مورس نے سب سے زیادہ 42 جبکہ کپتان ڈو پلیسی نے 38 رنز بنائے۔ انڈیا کی طرف سے چہل نے چار، کلدیپ یادو نے ایک جبکہ بمرا اور بھونیشور کمار نے دو دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

کرکٹ ورلڈ کپ پر بی بی سی اردو کا خصوصی ضمیمہ

جواب میں انڈیا نے یہ ہدف 47.3 اوورز میں چار وکٹوں کے نقصان پر پورا کر لیا۔ انڈیا کی جانب سے روہت شرما نے 122 رنز کی ناقابلِ شکست اننگز کھیلی جبکہ جنوی افریقہ کہ کگیسو ربادا نے دو جبکہ کرس مورس اور اینڈلے فیفلکوایو نے ایک ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

میچ کے بہترین لمحات

جب جنوبی افریقہ نے پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا تو شاید ان کے وہم و گمان میں بھی نہ تھا کہ بمرا ان کے ساتھ کیا کرنے والے ہیں۔

اننگز کے ابتدائی اوورز میں کوئنٹن ڈی کاک اور ہاشم آملہ بمرا کی گیندوں کو چھونے سے بھی قاصر نظر آتے تھے۔ نہ صرف ان کی گیندوں کی رفتار تیز تھی بلکہ وہ گیند کو ہوا میں سوئنگ بھی کر رہے تھے اور پچ سے بھی مدد حاصل کر رہے تھے۔

مزید پڑھیں

دس بڑے کھلاڑی جو کرکٹ کا عالمی کپ نہ جیت سکے

وہ میچ جہاں سے کرکٹ ورلڈ کپ کا سلسلہ شروع ہوا

اس ورلڈ کپ میں صرف 10 ٹیمیں کیوں؟

ان کے اوپننگ سپیل کی دہشت اتنی تھی کہ انھوں نے اپنے پہلے پانچ اوورز میں صرف 13 رنز دیے اور دونوں اوپنرز کو پویلین کی راہ دکھائی۔ ایک انڈین فاسٹ بولر کے لیے ایسا کرنا یقیناً تاریخی اہمیت رکھتا ہے۔

بمرا نے آنے والے میچوں کے لیے باقی ٹیموں کے بلے بازوں کو یہ ٹریلر دکھایا اور انڈیا میں کرکٹ کے مداح یہ ٹریلر برسوں یاد رکھیں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption روہت نے 13 چوکوں اوردو چھکوں کی مدد سے ایک روزہ میچوں میں اپنی 23ویں سنچری مکمل کی

میچ کا بہترین بلے باز

روہت شرما نے ایک ایسے موقعے پر ٹیم کو سہارا دیا جب ان کے ساتھی اوپنر شکھر دھون اور کپتان ورات کوہلی ہدف کے تعاقب کے دوران جلدی آؤٹ ہو گئے تھے۔

انھوں نے 13 چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے ایک روزہ میچوں میں اپنی 23ویں سنچری مکمل کی۔

اس اننگز کے دوران روہت کئی موقعوں پر خوش قسمت رہے لیکن وہ ذمہ دارانہ بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے رہے اور بالاخر یہ ہدف باآسانی پورا کرنے میں کامیاب ہو گئے۔

وہ ناقابلِ شکست 122 رنز کی بدولت مین آف دی میچ قرار پائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption چہل نے اپنے دوسرے ہی اوور میں دونوں بلے بازوں کو بولڈ کر کے جنوبی افریقی بیٹنگ کی کمر توڑ دی

میچ کا بہترین بولر

انڈیا کے لیگ سپنر چہل ایک ایسے موقعے پر بولنگ کروانے کے لیے آئے جب جنوبی افریقہ کے کپتان فاف ڈوپلیسی اور مڈل آرڈر بیٹسمین روسی وینڈر ڈوسن ذمہ دارانہ بیٹنگ کرتے ہوئے 54 رنز کی شراکت جوڑ چکے تھے۔

ایسے میں چہل نے اپنے دوسرے ہی اوور میں دونوں بلے بازوں کو بولڈ کر کے جنوبی افریقی بیٹنگ کی کمر توڑ دی۔ اس کے بعد بھی چہل نے دو مزید بلے باز آؤٹ کر کے جنوبی افریقہ کے ایک اچھے ہدف تک پہنچنے کی امید بھی ختم کر دی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption اس میچ میں بھی ایک معمولی ہدف کے دفاع میں جنوبی افریقہ نے خراب فیلڈنگ اور متعدد کیچ چھوڑنے کی وجہ سے قیمتی رنز دیے

جنوبی افریقہ کی ناقص فیلڈنگ

روہت شرما اور ایم ایس دھونی کے کیچز چھوڑنا جنوبی افریقہ کو مہنگا پڑ گیا۔

جنوبی افریقہ کو اس ٹورنامنٹ میں اب تک تین لگاتار شکستوں کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ اس کی ایک وجہ تو ان کے اہم بولرز کا زخمی ہونا ہے، لیکن اس کے علاوہ جنوبی افریقہ کی فیلڈنگ بھی تمام میچوں میں ناقص رہی ہے۔

اس میچ میں بھی ایک معمولی ہدف کے دفاع میں جنوبی افریقہ نے خراب فیلڈنگ اور متعدد کیچ چھوڑنے کی وجہ سے نہ صرف قیمتی رنز دیے بلکہ انڈیا پر موجود دباؤ بھی کم کر دیا۔ یہ اس لیے بھی حیران کن ہے کیونکہ عام طور پر جنوبی افریقہ اپنی شاندار فیلڈنگ کی وجہ سے جانی جاتی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں