کرکٹ ورلڈ کپ 2019: انگلینڈ کو شکست دے کر آسٹریلیا سیمی فائنل میں

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption آسٹریلیا کے فاسٹ بولر جوزف برینڈوف نے انگلینڈ کے پانچ بلے بازوں کو پویلین کی راہ دیکھائی

آئی سی سی ورلڈ کپ کے 32ویں میچ میں آسٹریلیا نے انگلینڈ کو ہرا کر سیمی فائنل کے لیے کوالیفائی کر لیا ہے۔

انگلینڈ کو سیمی فائنل میں کوالیفائی کرنے کے لیے اپنے باقی دونوں میچ جیتنے ہیں۔ انگلینڈ کو انڈیا اور نیوزی لینڈ سے میچ کھیلنے ہیں۔

انگلینڈ 286 رنز کے ہدف کے تعاقب میں 221 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی۔ آل راونڈر بین سٹروکس کے علاوہ کوئی انگلش بیٹسمین جم کر نہ کھیل سکا۔

تفصیلی سکور کارڈ کے لیے کلک کریں

فاسٹ بولر جوزف برینڈوف نے پانچ کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

انگلینڈ نے ٹاس جیت کر آسٹریلیا کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی۔ آسٹریلیا کے ابتدائی بلے بازوں نے ناموافق موسمی حالات میں عمدہ کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے پہلے 22 اووروں میں بغیر کسی نقصان کے 122 بنائے لیکن انگلینڈ نے اگلے 28 اووروں میں عمدہ بولنگ کرتے ہوئے آسٹریلیا کو 286 رنز تک محدود کر دیا۔

انگلینڈ نے جب 286 رنزکے ہدف کا تعاقب شروع کیا تو اسے پہلے اوور میں نقصان اٹھانا پڑا۔

انگلینڈ کو پہلے اوور میں اس وقت پہلا نقصان اٹھانا پڑا جب فاسٹ بولرجوزف برینڈوف نےجیمز ونس کو آؤٹ کر دیا۔ فاسٹ بولر مچل سٹارک نے جو روٹ کو ایل بی ڈبلیو آؤٹ کر دیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption مچل سٹارک نے میچ میں فیصلہ کردار ادا کیا

ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا متنازعہ فیصلہ

جب پاکستان کے کپتان سرفراز نے حریف انڈیا کے خلاف ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا اور میچ کا فیصلہ پاکستانی شائقین کی خواہشات کے برعکس آیا تو ملک میں طوفان آ گیا۔ طرح طرح کی سازشی فلسفے بیان کیے جانے لگے۔

انگلینڈ اور آسٹریلیا کے میچ میں صورتحال پاکستان جیسی ہی تھی۔ گذشتہ رات کی بارش اور ابر آلود موسم کی وجہ سے تمام ماہرین اس پر متفق نظر آئے جو ٹیم ٹاس جیتے گی وہ مخالف ٹیم کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دے گی۔ جب ایون مورگن نے ٹاس جیت کر آسٹریلیا کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی تو خیال کیا جا رہا تھا کہ انگلینڈ کی ٹیم اپنےابتدائی اووروں میں آسٹریلیا کو نقصان پہنچا کر اسے دباؤ میں لے آئے گی لیکن ایسا نہ ہوسکا اور دونوں اوپنروں نے 22 اووروں میں بغیر کسی نقصان 122 رنز بنا ڈالے۔

انگلینڈ کو پہلی کامیابی 23ویں اوور میں ہوئی جب آف سپنر معین علی نے ڈیوڈ وارنرکیچ آؤٹ کرا دیا۔ میچ کے بعد ایون مورگن سے بھی یہیں سوال ہوا کہ کیا ان کو آسٹریلیا کو پہلے بیٹنگ کو دعوت دے کر غلطی کی تو انھوں نے کہا بلکل نہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

عثمان خواجہ کو کس نمبر پر بیٹنگ کرنی چاہیے؟

ڈیوڈ وارنر اور سٹیو سمتھ پر بال ٹمپرنگ کی پاداش میں ایک سال تک کھیل پر پابندی کے دوران عثمان خواجہ آسٹریلیا کی بیٹنگ کی ریڑھ کی ہڈی بن کر سامنے آئے۔ عثمان خواجہ نے سپنروں کے خلاف اپنی کارکردگی کو بہتر بنایا اور ورلڈ کپ سے پہلے انڈیا اور پاکستان کے خلاف ون ڈے سیریز میں انتہائی عمدہ بیٹنگ کرتے ہوئے ورلڈ کپ میں پہنچے۔

جب ایک میچ انھیں پانچویں نمبر پر بیٹنگ کے بھیجا گیا اور وہ زیادہ اچھی کارکردگی نہ دکھا سکے تو آسٹریلیا کے سابق کپتان مائیکل کلارک کو یہ بات بری لگی کہ عثمان خواجہ کو پانچویں نمبرپر کیوں کھیلا جا رہا ہے۔ جب عثمان خواجہ کو تیسرے نمبر پر بیٹنگ کے لیے کھیلایا گیا تو انھوں نے 80 رنز کی عمدہ اننگز کھیلی۔ آج جب عثمان خواجہ ایک بار تیسرے نمبر پر بیٹنگ کے لیے آئے اور وہ زیادہ اچھی کارکردگی کا مظاہرہ نہ کرسکے تو مائیکل کلارک عثمان خواجہ کی جگہ اب سٹیو سمتھ کو تیسرے نمبر پر کھلانے کی حمایت کرتے دکھائی دیئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption انگلینڈ نے ٹاس جیت کر آسٹریلیا کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی ہے

متعلقہ عنوانات