کرکٹ ورلڈ کپ 2019: سری لنکا کی ویسٹ انڈیز پر 23 رنز سے فتح

ایلین تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption فیبیبن ایلین اور نکولس پورن نے ہدف کے تعاقب میں ویسٹ انڈیز کی امیدیں برقرار رکھی ہوئی ہیں

کرکٹ کے 12ویں عالمی کپ کے 39ویں میچ میں سری لنکا نے ویسٹ انڈیز کو چیسٹرلی سٹریٹ میں 23 رنز سے شکست دے کر ٹورنامنٹ میں تیسری کامیابی حاصل کر لی ہے۔

میچ میں کیا ہوا؟

ویسٹ انڈیز کے کپتان جیسن ہولڈر نے ٹاس جیت کر پہلے بولنگ کرنے کا فیصلہ کیا تو سری لنکن اوپنرز نے 93 رنز کی مضبوط شراکت قائم کی۔ اس کے بعد نوجوان بلے باز اوشکا فرنینڈو نے شاندار سنچری بنا کر سری لنکا کی بڑے ٹوٹل تک رسائی یقینی بنائی۔ انھوں نے 103 گیندوں پر 104 رنز بنائے۔

سری لنکا نے مقررہ پچاس اوورز میں چھ وکٹوں کے نقصان پر 338 رنز بنائے ہیں۔ ویسٹ انڈیز کی جانب سے جیسن ہولڈر نے دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

جواب میں ویسٹ انڈیز کی ٹیم نو وکٹوں کے نقصان پر 315 رنز ہی بنا سکی۔ ویسٹ انڈیز کی جانب سے نکولس پورن نے 103 گیندوں پر 115 رنز کی شاندار اننگز کھیلی۔ سری لنکا کی جانب سے لاستھ ملنگا نے سب سے زیادہ تین وکٹیں حاصل کیں۔

یہ میچ اسی میدان پر کھیلا جا رہا تھا جہاں تین جولائی کو نیوزی لینڈ اور انگلینڈ کے مابین ایک اہم میچ کھیلا جائے گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption نوجوان بلے باز اوشکا فرنینڈو نے شاندار سنچری بنا کر سری لنکا کی بڑے ٹوٹل تک رسائی یقینی بنائی۔ انھوں نے 103 گیندوں پر 104 رنز بنائے

میچ کے بہترین بلے باز

اس ورلڈ کپ میں نوجوان بلے بازوں نے بھی اپنا لوہا منوایا ہے۔ پاکستان کے بابر اعظم اور آسٹریلیا کے ایلیکس کیری جیسے بلے بازوں نے عمدہ کھیل پیش کر کے اپنی ٹیموں کو یقینی شکست سے بچایا ہے۔

آج بھی کچھ ایسا ہی ہوا جب سری لنکا کے اوشکا فرنینڈو نے 104 رنز کی خوبصورت اننگز کھیلی اور سری لنکا کی اننگز کو دہرے نقصان کے بعد سنبھالا دیا۔ فرنینڈو کی خوبصورت بات ان کی ٹائمنگ ہے اور وہ شارٹ گیندوں کو بہت اچھا کھیلتے ہیں۔ ان کی اننگز میں 9 چوکے اور دو چھکے شامل تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption نکولس پورن نے 11 چوکوں اور چار چھکوں کی مدد سے 118 رنز بنائے

دوسری جانب ویسٹ انڈیز کے نکولس پورن تھے جنھوں نے ایک ناقابلِ یقین اننگز کھیل کر اپنی ٹیم کو فتح کے قریب پہنچا دیا تھا لیکن آخر میں ان کا ساتھ دینے والا کوئی نہیں بچا۔

پورن ایک ایسے موقع پر کریز پر آئے جب ویسٹ انڈیز کے تین کھلاڑی پویلین لوٹ چکے تھے۔ ایسے میں انھوں نے 11 چوکوں اور چار چھکوں کی مدد سے 118 رنز بنائے۔ ان کی اننگز کی خاص بات ان کی زہانت تھی۔ پورن کے ساتھ موجود فیبیئن ایلین اگر رن آؤٹ نہ ہوتے تو شاید اس میچ کی کہانی یکسر مختلف ہوتی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ویسٹ انڈیز نے اس ٹورنامنٹ کا آغاز تو بہت اچھا کیا تھا لیکن وہ اس کے بعد کوئی بھی میچ نہیں جیت پائے

اس ٹورنامنٹ میں دونوں ٹیموں کی کارکردگی

دونوں ٹیمیں اس ورلڈ کپ کے سیمی فائنل کی دوڑ سے باہر ہو چکی ہیں جس کے باعث یہ میچ کسی اور ٹیم کے لیے بھی کوئی معنی نہیں رکھتا۔

اس ٹورنامنٹ میں دونوں ٹیموں کی کارکردگی مایوس کن رہی ہے۔ ویسٹ انڈیز نے اس ٹورنامنٹ کا آغاز تو بہت اچھا کیا تھا لیکن وہ اس کے بعد کوئی بھی میچ نہیں جیت پائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption سری لنکا کے کسال پریرا نے اس ٹورنامنٹ میں اب تک صرف 255 رنز بنائے ہیں

دوسری جانب سری لنکا نے انگلینڈ کو ہرا کر تو ٹورنامنٹ کا بڑا اپ سیٹ کیا، لیکن وہ بھی افغانستان سے کامیابی کے علاوہ خاطر خواہ کارکردگی نہیں دکھا پائے۔

دونوں ٹیموں کی بنیادی کمزوری ان کی بیٹنگ ہے۔ اس ٹورنامنٹ میں جہاں بلے بازوں نے 500 سے زائد رنز بنائے ہیں، وہاں ویسٹ انڈیز کے نکولس پورن نے سب سے زیادہ 309 اور سری لنکا کے کسال پریرا نے صرف 255 رنز بنائے ہیں۔

اسی بارے میں