کرکٹ: پاکستان سپر لیگ کے آئندہ ایڈیشن میں کھلاڑیوں کا انتخاب غیر روایتی طریقے سے کرنے کا فیصلہ

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption پاکستان سپر لیگ نے یہ قدم شائقین کو اس ایونٹ سے مزید قریب لانے کی سوچ کے تحت اٹھایا ہے

پاکستان کرکٹ بورڈ نے آئندہ برس ہونے والے پاکستان سپر لیگ کے پانچویں ایڈیشن میں کھلاڑیوں کے انتخاب کے لیے سٹریٹ کرکٹ میں رائج دلچسپ مگر غیر روایتی طریقہ کار اختیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

پاکستان سپر لیگ نے یہ قدم شائقین کو اس ایونٹ سے مزید قریب لانے کی سوچ کے تحت اٹھایا ہے۔

سٹریٹ کرکٹ میں باریاں کیسے لی جاتی ہیں؟

گلی محلوں میں کھیلی جانے والی کرکٹ میں پہلی باری کے لیے عام طور پر ٹاس نہیں ہوا کرتا بلکہ بچے اور نوجوان لڑکے اس کے لیے مختلف طریقے اختیار کرتے ہیں۔

ان طریقوں میں سے ایک طریقہ ’پُوگم پُگائی‘ کا ہے جس میں شریک بچے ہاتھ ایک ساتھ ملا کر اسے ہوا میں بلند کرتے ہیں اور پھر ہتھیلی کے سیدھا یا الٹے ہونے کی بنیاد پر باریاں طے ہوتی ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

پی ایس ایل میں تماشائی کیوں نہیں آتے؟

’تو یونس خان سے پوچھنے میں کیا حرج ہے؟‘

بے پناہ خرچوں کے بعد آخر لاہور قلندرز پھر ناکام کیوں؟

لیکن اگر کھیلنے والے زیادہ ہوں تو دوسرے طریقے میں بلے کو زمین پر رکھ کر وہاں چاک یا تنکے سے زمین پر لکیریں کھینچ دی جاتی ہیں اور سب آ کر ایک ایک لکیر پر انگلی رکھ دیتے ہیں جس سے ان کی باری کا تعین ہوتا ہے۔

گلی محلے میں کرکٹ کی باری لینے کے لیے کندھے کا استعمال بھی ہوتا ہے جس میں ایک کھلاڑی دوسرے کے کندھے پر ہاتھ رکھ کر انگلی کے ذریعے نمبر پوچھتا ہے کہ یہ کس کی باری ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption گلی محلے میں کرکٹ کی باری لینے کے لیے کندھے کا استعمال بھی ہوتا ہے

پی ایس ایل میں کھلاڑیوں کا انتخاب کیسے ہوتا رہا ہے؟

پاکستان سپر لیگ میں اب تک پہلے کھلاڑی کے انتخاب کا حق آخری نمبر پر آنے والی ٹیم کو دیا جاتا رہا ہے۔

لاہور قلندر کی ٹیم چونکہ ہر پی ایس ایل ایڈیشن میں آخری نمبر پر آتی رہی ہے لہذا ڈرافٹنگ کے مرحلے میں پہلا کھلاڑی وہی منتخب کرتی رہی ہے۔

گذشتہ برس پاکستان سپر لیگ کی گورننگ کونسل میں یہ تجویز سامنے آئی تھی کہ ڈرافٹنگ میں کھلاڑیوں کے انتخاب کے لیے متفرق طریقہ اختیار کیا جائے۔

اس طریقے کو رواں برس پاکستان سپر لیگ کے سیزن میں اپنایا جانا تھا لیکن پھر یہ طے ہوا کہ اسے سنہ 2020 کے پی ایس ایل مقابلوں سے شروع کیا جائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption اس طریقے کو رواں برس پاکستان سپر لیگ کے سیزن میں اپنایا جانا تھا لیکن پھر یہ طے ہوا کہ اسے سنہ 2020 کے پی ایس ایل مقابلوں سے شروع کیا جائے

تین نومبر کو ہونے والی تقریب میں سٹریٹ کرکٹ کا کوئی نہ کوئی دلچسپ طریقہ اختیار کر کے یہ فیصلہ کر لیا جائے گا کہ ڈرافٹنگ میں پہلی پِک کس فرنچائز کی ہو گی۔ ڈرافٹنگ کی تقریب آئندہ ماہ لاہور میں ہو گی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے پی ایس ایل مقابلوں میں اس بار کھلاڑیوں کی ڈرافٹنگ کے لیے ایک سافٹ ویئر تیار کیا ہے جس کے ذریعے تمام فرنچائزز اپنے کھلاڑیوں کا انتخاب کریں گی۔

پاکستان سپر لیگ میں ہر ٹیم دس کھلاڑیوں کو برقرار رکھ سکتی تھی تاہم اس بار یہ تعداد کم کر کے آٹھ کر دی گئی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں