عمران خان: انڈیا کی کرکٹ ٹیم کے دورہ پاکستان کی ’امید کی جا سکتی ہے‘

عمران خان: انڈیا کی کرکٹ ٹیم کے دورہ پاکستان کی ’امید کی جا سکتی ہے‘

پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ کی واپسی کے حوالے سے وزیر اعظم پاکستان عمران خان کا کہنا ہے کہ گیارہ ستمبر کے حملوں کے بعد 2019 پاکستان کا سب سے محفوظ سال رہا جبکہ ’نائن الیون کے بعد 2006 میں سکیورٹی صورتحال کی وجہ سے بین الاقوامی ٹیموں نے پاکستان آنا چھوڑ دیا تھا۔‘

بی بی سی کی مشال حسین کو دیے انٹرویو میں انھوں نے کہا ہے کہ اب کئی ملکوں نے پاکستان جانے والوں کے لیے سفری ہدایات ختم کر دی ہیں۔ ’میں نے صدر ٹرمپ سے بھی کہا ہے کہ ہمارے ملک کے لیے سفری ایڈوائزری ختم کی جائے۔ سیاحت ایک سال میں دگنی ہوگئی کیونکہ اب ملک محفوظ ہے۔ تو میں امید رکھتا ہوں کہ بین الاقوامی ٹیمیں جلد پاکستان کا دورہ کریں گی۔‘

انڈیا کی ٹیم کے ممکنہ دورہ پاکستان کے بارے میں انھوں نے کہا کہ ’انھیں امید ہے (کہ انڈیا کی ٹیم بھی پاکستان آئے گی۔)‘

’میں نے وزیر اعظم بننے کے بعد انڈیا سے رابطہ کیا کیونکہ میں انڈیا کو جانتا ہوں۔ مجھے کئی سال تک انڈیا میں پیار اور عزت ملتی رہی ہے۔ اگر ہمارے ملک آپس میں تجارت شروع کر دیں تو یہ غربت کے خاتمے کا بہترین حل ہوگا۔ افسوس ہے کہ انڈیا پر انتہا پسند نظریہ غالب آگیا ہے۔‘

وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ انڈیا کی کرکٹ ٹیم کے دورہ پاکستان کی امید کی جاسکتی ہے جب ’شاید اگلے انتخابات کے بعد حالات بہتر ہو جائیں گے۔‘