نیوزی لینڈ نے انڈیا کو ولنگٹن ٹیسٹ میچ میں دس وکٹوں سے ہرا دیا

انڈین ٹیم تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption انڈین کپتان وراٹ کوہلی اس ٹیسٹ میچ کی دونوں اننگز میں بڑا سکور نہ کر سکے

نیوزی لینڈ نے دو کرکٹ ٹیسٹ میچوں کی سیریز کے پہلے میچ میں انڈیا کو باآسانی دس وکٹوں سے شکست دے کر سیریز میں ایک صفر سے برتری حاصل کر لی ہے۔

ولنگٹن کے بیسن ریزرو سٹیڈیم میں کھیلے جانے والے میچ کا فیصلہ چوتھے دن کی صبح دوسرے گھنٹے ہی ہو گیا جب انڈیا کی جانب سے دیا گیا نو رنز کا ہدف میزبان ٹیم نے بغیر کسی نقصان کے حاصل کر لیا۔

پیر کو جب کھیل شروع ہوا تو انڈیا نے اپنی دوسری اننگز چار وکٹوں پر 144 رنز سے دوبارہ شروع کی اور اسے دن کے تیسرے اوور میں ہی اس وقت پانچواں نقصان اٹھانا پڑا جب اجنکیا رہانے بولٹ کی گیند پر پویلین لوٹ گئے۔

یہ بھی پڑھیے

کوہلی ’چار روزہ ٹیسٹ میچ‘ کی تجویز کے خلاف کیوں؟

اگلے ہی اوور میں ٹم ساؤدی نے جب ہنوما وہاڑی کو بولڈ کیا تو انڈیا کی ٹیم پر اننگز کی شکست کا خطرہ منڈلانے لگا۔

رشبھ پانٹ اور ایشانت سرما کی مختصر مگر اہم اننگز انڈیا کو اس خطرے سے تو نکالنے میں کامیاب رہیں لیکن پوری انڈین ٹیم 191 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئی اور یوں اسے نیوزی لینڈ پر صرف آٹھ رنز کی برتری ملی۔

نیوزی لینڈ کی جانب سے ساؤدی 61 رنز کے عوض پانچ وکٹیں لے کر سب سے کامیاب بولر رہے جبکہ ان کے ساتھی فاسٹ بولر ٹرینٹ بولٹ نے 39 رنز کے عروض چار کھلاڑیوں کو پویلین پہنچایا۔

ساؤدی کو ولنگٹن ٹیسٹ میں نو وکٹیں لینے پر میچ کا بہترین کھلاڑی بھی قرار دیا گیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption کین ولیمسن نے نیوزی لینڈ کی جانب سے پہلی اننگز میں نصف سنچری بنائی تھی

21 فروری کو شروع ہونے والے اس میچ میں نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بولنگ کرنے کا فیصلہ کیا تھا اور انڈیا کی ٹیم پہلی اننگز میں ساؤدی اور اپنا پہلا ٹیسٹ کھیلنے والے کائل جیمیسن کی تباہ کن بولنگ کے سامنے زیادہ دیر نہیں ٹھہر سکی تھی اور 165 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی تھی۔

اس کے جواب میں نیوزی لینڈ نے اپنی پہلی اننگز میں نصف سنچری بنانے والے کین ولیمسن کے علاوہ راس ٹیلر،جیمیسن اور گرینڈہوم کی ذمہ دارانہ بلے بازی کی بدولت 348 رنز بنائے تھے۔

یہ نیوزی لینڈ کی ٹیسٹ کرکٹ میں سوویں اور دس وکٹوں سے پانچویں جیت ہے اور ان پانچ میں سے تین بار اس کی مدِمقابل ٹیم انڈیا ہی تھی۔

انڈین ٹیم کا دورۂ نیوزی لینڈ اب تک ملا جلا رہا ہے۔ دورے کے آغاز پر پانچ میچوں کی ٹی ٹوئنٹی سیریز میں مہمان ٹیم نے پانچ صفر سے وائٹ واش کیا تو تین میچوں کی ون ڈے سیریز میں خود اسے اس ہزیمت کا سامنا کرنا پڑا۔

اب دو میچوں کی ٹیسٹ سیریز میں نیوزی لینڈ کو ناقابلِ شکست برتری مل چکی ہے اور دیکھنا ہو گا کہ کیا انڈین ٹیم 29 فروری سے شروع ہونے والا دوسرا میچ جیت کر سیریز برابر کر سکتی ہے یا ون ڈے کے بعد ٹیسٹ سیریز میں بھی شکست ہی اس کا مقدر بنتی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں