#DarrenSammy: ویسٹ انڈین کرکٹر کے لیے پاکستان کی اعزازی شہریت اور اعلی ترین شہری ایوارڈ کا اعلان

سیمی تصویر کے کاپی رائٹ Twitter/PCB
Image caption صدرِ پاکستان ڈاکٹر عارف علوی 23 مارچ کو اسلام آباد میں ہونے والی تقریب میں ڈیرن سیمی کو یہ ایوارڈ دیں گے

حکومتِ پاکستان نے ویسٹ انڈین کرکٹر اور پاکستان سپر لیگ میں حصہ لینے والی پشاور زلمی کے کپتان ڈیرن سیمی کو پاکستان کا اعلی ترین شہری ایوارڈ دینے کا اعلان کیا ہے۔ ساتھ ہی انھیں پاکستان کی اعزازی شہریت دینے کا بھی اعلان کیا گیا ہے۔

اس بات کا اعلان پاکستان کرکٹ بورڈ نے ایک ٹویٹ کے ذریعے کیا جس میں مزید کہا گیا ہے کہ صدرِ پاکستان ڈاکٹر عارف علوی 23 مارچ کو اسلام آباد میں ہونے والی تقریب میں ڈیرن سیمی کو یہ ایوارڈ دیں گے۔

جاوید آفریدی نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر لکھا کہ پاکستانی کرکٹ کی تاریخ میں یہ اعزاز پشاور زلمی کے حصے میں آیا ہے کہ اس کے کپتان کو حکومت پاکستان کی طرف سے اعلی ترین سول ایوارڈ سے نوازا گیا۔

جاوید آفریدی نے بی بی سی اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ڈیرن سیمی کو پاکستان کا اعلی ترین سول ایوارڈ دیا جانا پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ کی واپسی میں ان کی خدمات کا اعتراف ہے۔

یہ بھی پڑھیے

ڈیرن سیمی کی سیلفی اور پشتو میں ٹویٹ

’یہ جیت میرے کریئر کا ایک اہم مقام ہے‘

کراچی میں کھیلنے پر خوش ہوں: ڈیرن سیمی

تصویر کے کاپی رائٹ Peshawar Zalmi

ان کا مزید کہنا تھا کہ اس ایوارڈ سے دنیا کو پیغام دیا گیا ہے کہ یہ ملک کھیل اور کھلاڑیوں سے محبت کرنے والا ملک ہے اور اس کے لوگ ہر اس شخص کو سر آنکھوں پر بٹھاتے ہیں جو یہاں امن و محبت کے فروغ کے لیے اپنا کردار ادا کرتے ہیں۔

جاوید آفریدی کا یہ بھی کہنا تھا کہ پی ایس ایل کی ٹرافی کی تقریبِ رونمائی میں انھوں نے پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین احسان مانی سے درخواست کی تھی کہ ڈیرن سیمی کی اعزازی شہریت کی درخواست حکومت کے پاس موجود ہے، اسے جلد از جلد عملی شکل دینے میں وہ بھی ان کی مدد کریں۔

پشاور زلمی نے ڈیرن سیمی کی مزارِ قائداعظم پر حاضری کی ایک ویڈیو بھی جاری کی ہے جس میں ڈیرن سیمی کہتے ہیں کہ انھوں نے اپنی زندگی میں اس عظیم رہنما کے اصول، اتحاد، ایمان اور نظم وضبط اپنائے رکھے ہیں۔ اور یہ پیغام وہ نہ صرف زلمی ٹیم بلکہ پاکستانی قوم اور پوری دنیا تک پہنچانے کی کوشش کریں گے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Peshawar Zalmi

قابل ذکر بات یہ ہے کہ پشاور زلمی کے سربراہ جاوید آفریدی کو بھی حکومت پاکستان نے کرکٹ کی خدمات پر ستارہ امتیاز دینے کا اعلان کیا ہے۔

کھیلوں سے وابستہ شخصیات کو اعزازی شہریت

دنیا میں بہت کم ایسی مثالیں موجود ہیں کہ کسی کھلاڑی یا کسی کھیل سے وابستہ کسی شخصیت کو کسی ملک نے اعزازی شہریت دی ہو۔

سنہ 2002 میں شمالی کوریا نے فٹبال کوچ گس ہڈینک کو اعزازی شہریت دی تھی جن کی کوچنگ میں کوریا کی ٹیم نے فٹبال ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں جگہ بنائی تھی۔

سنہ 2006 میں امریکی فٹبالر ہائنز وارڈ کو کوریا کی اعزازی شہریت دی گئی جنھوں نے کوریا میں آدھے کورین باشندوں کے لیے پائی گئی تفریق کو کم سے کم کرنے کی کوشش کی تھی۔

سنہ 2007 میں ویسٹ انڈیز میں ہونے والے کرکٹ کے عالمی کپ کے بعد سینٹ کٹس نے آسٹریلیا کے میتھیو ہیڈن اور جنوبی افریقہ کے ہرشل گبز کو اعزازی شہریت دی تھی۔

سنہ 2013 میں کولمبیا نے ارجنٹائن سے تعلق رکھنے والے فٹبال کوچ ہوزے پیکرمین کو اعزازی شہریت دی تھی جنھوں نے کولمبیا کی ٹیم کو سنہ 2014 کے ورلڈ کپ میں کوالیفائی کرایا تھا۔

اسی بارے میں