BBC Indian Sportswoman of Year: بیڈمِنٹن کھلاڑی سندھو بی بی سی کی پہلی انڈین سپورٹس وومن آف دی ایئر

پی وی سندھو

،تصویر کا ذریعہGetty Images

انڈیا کی معروف بیڈمِنٹن کھلاڑی پی وی سندھو کو ووٹنگ کے ذریعے سنہ 2019 کے لیے بی بی سی انڈین سپورٹس وومن آف دی ایئر منتخب کر لیا گیا ہے۔

گذشتہ سال پی وی سندھو (پوسرلا وینکٹ سندھو) نے سوئٹزرلینڈ میں ہونے والی بیڈمِنٹن ورلڈ چیمپیئن شپ جیتی تھی اور ایسا کرنے والی وہ پہلی انڈین خاتون کھلاڑی بنی تھیں۔

ایوارڈ جیتنے پر سندھو نے کہا 'میں بی بی سی کی انڈین سپورٹس وومن آف دی ایئر ٹیم کا شکریہ ادا کرنا چاہوں گی۔ مجھے بہت خوشی ہے کہ مجھے یہ ایوارڈ ملا۔ میں اس پہل پر بی بی سی انڈیا کا بھی شکریہ ادا کرنا چاہوں گی اور اپنے مداحوں کا بھی شکریہ ادا کرتی ہوں۔'

پی وی سندھو نے ورلڈ چیمپیئن شپ میں پانچ میڈلز حاصل کیے ہیں۔ وہ اولمپکس میں خواتین کے بیڈمِنٹن سنگلز میں چاندی کا تمغہ جیتنے والی انڈیا کی پہلی کھلاڑی ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

سندھو نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا 'میں اس ایوارڈ کو اپنے حامیوں اور مداحوں سے منسوب کرنا چاہتی ہوں جنھوں نے ہمیشہ میرا ساتھ دیا اور مجھے ووٹ دیا۔ بی بی سی انڈین سپورٹس وومن آف دی ایئر جیسے ایوارڈز ہم سب کو بہتر سے بہتر کرنے کی ترغیب دیتے ہیں۔ نوجوان خواتین کھلاڑیوں کے لیے میرا پیغام یہ ہو گا کہ خواتین کی حیثیت سے ہمیں خود پر اعتماد کرنا ہو گا۔ کامیابی کی کنجی محنت ہے۔ مجھے بھروسہ ہے کہ جلد ہی مزید انڈین خواتین ملک کے لیے ایوارڈز جیتیں گی۔‘

اس موقع پر مرکزی وزیرِ مملکت برائے کھیل (آزادانہ چارج) کرن ریجیجو نے کہا 'اگر کھیل کی ترقی ہو گی تو ہی انڈیا ترقی کرے گا۔ کھیلوں سے وابستہ خواتین کی عزت افزائی کرنا ایک اچھا اقدام ہے۔ بی بی سی کو دنیا میں شناخت ہے۔ مجھے امید ہے کہ اس کا اچھا اثر پڑے گا۔ ہمیں ایسا ماحول پیدا کرنا چاہیے جہاں نوجوان کھلاڑی بڑے خواب دیکھ سکیں۔'

پی وی سندھو 17 سال کی عمر میں ہی ستمبر 2012 میں بی ڈبلیو اے ایف ورلڈ رینکنگ میں ٹاپ 20 کھلاڑیوں میں شامل ہو گئی تھیں۔

گذشتہ چار سالوں سے وہ مستقل طور پر ٹاپ 10 کھلاڑیوں میں شامل ہیں۔ زبردست سمیش لگانے والی سندھو سے انڈیا نے ٹوکیو اولمپکس میں بہت زیادہ امیدیں وابستہ کر رکھی ہیں۔

،تصویر کا کیپشن

پی ٹی اوشا نے کرن ریجیجو سے ایوارڈ حاصل کیا

پی ٹی اوشا کو لائف ٹائم ایوارڈ

عالمی وویمن ڈے کے موقعے پر دہلی میں منعقدہ ایوارڈ کی تقریب میں ممتاز کھلاڑیوں، صحافیوں اور نامور شخصیات موجود تھیں۔

انڈیا کا نام روشن کرنے والی ایتھلیٹ پی ٹی اوشا کو کھیلوں میں اہم کردار ادا کرنے اور متاثر کن کردار نبھانے کے لیے 'لائف ٹائم ایچیومنٹ ایوارڈ' سے نوازا گیا۔

پی ٹی اوشا نے اپنی پوری زندگی میں 100 سے زیادہ قومی اور بین الاقوامی میڈلز اور ایوارڈ جیتے ہیں۔

انڈین اولمپک فیڈریشن نے پی ٹی اوشا کو صدی کی بہترین خاتون کھلاڑی کی حیثیت سے اعزاز بخشا ہے۔

پی ٹی اوشا سنہ 1984 کے لاس اینجلس اولمپکس میں خواتین کی 400 میٹر ہرڈل ریس میں کانسی کا تمغہ ایک سیکنڈ کے 100 ویں حصے سے حاصل نہیں کر سکی تھیں۔

فروری سنہ 2020 میں بی بی سی کی اس پہلی انڈین سپورٹ وومن آف دی ایئر کے پانچ فائنلسٹوں کے ناموں کا اعلان کیا گیا۔

ان میں ایتھلیٹ دوتی چند، باکسر مریم کوم، پہلوان ونیش پھوگٹ، پیرا بیڈمِنٹن کھلاڑی مانسی جوشی اور بیڈمِنٹن کھلاڑی پی وی سندھو شامل تھیں۔

ان کھلاڑیوں کو ملک کے مختلف حصوں سے تعلق رکھنے والے ممتاز افراد کے پینل نے نامزد کیا تھا۔

اس کے بعد تین فروری سنہ 2020 سے لے کر 24 فروری 2020 تک لوگوں نے اپنے پسندیدہ کھلاڑی کے حق میں ووٹ دیا۔

،تصویر کا کیپشن

بی بی سی میں ہندوستانی زبانوں کی سربراہ روپا جھا نے تمام کھلاڑیوں کو مبارکباد پیش کی

بی بی سی کا اعلان

بی بی سی کے ڈائریکٹر جنرل ٹونی ہال نے ایوارڈ کی تقریب کے موقع پر کہا کہ 'آج کی شام ایک وعدہ ہے۔ وعدہ یہ ہے کہ بی بی سی کھیلوں میں انڈین خواتین کھلاڑیوں کے بارے میں بات کرے گی اور ان کے مسائل کو اجاگر کرے گی۔‘

بی بی سی میں ہندوستانی زبانوں کی سربراہ روپا جھا نے تمام کھلاڑیوں کو مبارکباد پیش کی اور خواتین کے کھیلوں میں بی بی سی کی جانب سے کی جانے والی اس پیش قدمی کو جاری رکھنے کا وعدہ کیا۔