عبدالرحمن اور سمیع ٹیم میں شامل

فاسٹ بولر محمد سمیع اور لیفٹ آرم سپنر عبدالرحمن کو ویسٹ انڈیز میں ہونے والے ورلڈ ٹوئنٹی ٹوئنٹی کی پندرہ رکنی پاکستانی کرکٹ ٹیم میں شامل کرلیا گیا ہے۔

محمد سمیع
Image caption محمد سمیع قذافی سٹیڈیم میں ایک پریکٹس شیشن کے دوران (بالنگ کوچ وقار یونس پیچھے نظر آرہے ہیں)

دونوں کھلاڑیوں کو ان فٹ عمرگل اور یاسر عرفات کی جگہ ٹیم میں شامل کیا گیا ہے۔

غور طلب بات یہ ہے کہ اتوار کو چیف سلیکٹر محسن خان، کپتان شاہد آفریدی اور کوچ وقار یونس نے محمد سمیع اور نئے فاسٹ بولر محمد عرفان کی ٹیم میں شمولیت کا اعلان کردیا تھا لیکن اس اعلان کے کچھ ہی دیر بعد پاکستان کرکٹ بورڈ کے میڈیا ڈپارٹمنٹ نے ای میل کے ذریعے بے یقینی کی فضا پیدا کردی ہے کہ یہ اعلان حتمی نہیں کیونکہ چیئرمین اعجاز بٹ نے ان کھلاڑیوں کے ناموں کی منظوری نہیں دی ہے اور پیر کی رات پاکستان کرکٹ بورڈ نے محمد عرفان کے بجائے عبدالرحمن کو ٹیم میں شامل کرنے کا اعلان کرڈالا۔

اس سے قبل پاکستان کرکٹ بورڈ نے کپتان کی تقرری سے قبل اور کوچ وقار یونس سے مشورے کے بغیر ورلڈ ٹوئنٹی ٹوئنٹی کی ٹیم کا اعلان کردیا تھا جس پر کرکٹ کے حلقوں نے حیرت ظاہر کی تھی کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کو ٹیم کے اعلان میں اتنی جلدی کیا تھی۔

ان دو واقعات سے مبصرین یہ نتیجہ اخذ کر رہے ہیں کہ سلیکشن کے فیصلے کے بھی پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین اعجاز بٹ کر رہے ہیں۔

محمد سمیع 34ٹیسٹ اور83 ون ڈے انٹرنیشنل میچوں میں پاکستان کی نمائندگی کرچکے ہیں لیکن ابھی تک کسی ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میں نہیں کھیلے ہیں۔

حال ہی میں انہیں آسٹریلیا بھیجا گیا تھا جہاں وہ ان فٹ محمد عامر کی جگہ سڈنی ٹیسٹ کھیلے تھے جس کی پہلی اننگز میں انہوں نے تین وکٹیں حاصل کرکے آسٹریلیا کو صرف127 رنز پر آؤٹ کرنے میں مدد کی تھی۔

تیس سالہ عبدالرحمن اب تک دو ٹیسٹ اور گیارہ ون ڈے کھیل چکے ہیں اور ڈومیسٹک کرکٹ میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرتے آئے ہیں اسی بنا پر اس سال انہیں سینٹرل کنٹریکٹ دیا گیا ہے۔

اسی بارے میں