پینلٹی کک میں اب فریب نہیں چلےگا

فائل فوٹو
Image caption نئے اصول و ضوابط سے گول کیپر کو مدد ملیگی

فیفایعنی فیڈریشن انٹرنیشنل فٹبال ایسو سی ایشن نے پینالٹی کک کے لیے اصول میں تبدیلی کا اعلان کیا ہے اور پینالٹی لینے والے کھلاڑی کو کک کرنے سے قبل گول کیپر کو حکمت عملی کے تحت جھانسا دینے والی حرکت سے منع کر دیا گيا ہے۔

پینالٹی لینے والے کھلاڑی عام طور پر شوٹ کرنے سے پہلے بال کے پاس جھکتے یا اس طرح پینترا بدلتے ہیں کہ گول کیپر فریب کھا جاتا ہے۔

اس کے تحت کئی بار کھلاڑی پہلے بال کو ایک جانب کک کرنے کا بہانہ کرتا ہے اور جیسے ہی کیپر اس طرف بال کو روکنے کی کوشش کرتا ہے کھلاڑی دوسری جانب بال کو کک کرکے گول میں ڈال دیتا ہے۔

فٹبال کے تعلق سے عالمی ادارے فیفا کا کہنا ہے کہ اس طرح کی چال بازی در اصل کھیل کی روح کے منافی ہے اس لیے اس پر پابندی لگادی گئی ہے۔

تاہم پینالٹی لگانے والے کھلاڑی کو اب بھی اس بات کی اجازت ہوگی کہ وہ شوٹ کرتے وقت درمیان میں اچانک رک جائے اور پھر دوڑ کر شاٹ لگائے۔

اس فیصلے کا اعلان منگل کو کیا ہے، اس کا نفاذ آئندہ ورلڈ کپ سے شروع ہوگا جو تین ہفتے بعد جنوبی افریقہ میں کھیلا جانے والا ہے۔

ورلڈ کپ میں اس طرح کی چال بازی کرنے والے کھلاڑی کو پیلا کارڈ دکھایا جائیگا۔

انٹرنیشنل فٹبال ایسو سی ایشن بورڈ ( آئی ایف اے بی) جو فٹبال کھیل کے لیے اصول و ضوابط وضع کرتی ہے، اس کا کہنا ہے کہ برازیل میں اس طری کی چال بازی کا چلن زیادہ ہے جسے دھیان میں رکھتے ہوئے ایسا کیا گیا ہے۔

آئی ایف اے بی کے ایک رکن پیٹرک نیلسن کا کہنا ہے '' ہم نے اس سلسے میں کھیل کے ویڈیو دیکھے ہیں۔ جب کھلاڑی اپنے رن اپ کے اختتام پر آتا ہے تو وہ بال کک کرنے کا بہانہ کرتا ہے، جیسے ہی گول کیپرگیند کو روکنے کے لیے ایک جانب بڑھتا ہے، کھلاڑی اپنا پیر پیچھے کرتا ہے اور بال کو دوسری جانب کک کر دیتا ہے۔ یہ پوری طرح سے کھیل کی روح کے خلاف ہے۔''

فیفا کے حکام کا کہنا ہے کہ اس اصول کو نافذ کرنے کے لیے تمام اقدامات کیے جائیں گے اور اس میں میچ ریفری، کوچز اور کھلاڑیوں سمیت سب ہی کا رول اہم ہوگا۔

اسی بارے میں