آخری وقت اشاعت:  بدھ 26 مئ 2010 ,‭ 17:48 GMT 22:48 PST

شاہد آفریدی ٹیسٹ ٹیم کے بھی کپتان

اس مواد کو دیکھنے/سننے کے لیے جاوا سکرپٹ آن اور تازہ ترین فلیش پلیئر نصب ہونا چاہئیے

ونڈوز میڈیا یا ریئل پلیئر میں دیکھیں/سنیں

شاہد آفریدی کو ایشیا کپ کے علاوہ دورۂ انگلینڈ میں کھیلے جانے والے ٹیسٹ میچوں کے لئے بھی قیادت کی ذمہ داری سونپ دی گئی ہے۔

دوسری جانب پاکستان کرکٹ بورڈ نے قومی کیمپ کے لیے پینتیس ممکنہ کھلاڑیوں کے ناموں کا اعلان کرتے ہوئے یونس خان اور شعیب ملک کوبھی شامل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

دونوں کرکٹرز کو ان دنوں پابندی کی سزا کا سامنا ہے اور ان کی اپیلوں کی سماعت جسٹس ( ریٹائرڈ ) عرفان قادر پر مشتمل ایک رکنی ٹریبونل کر رہا ہے تاہم پیر کے روز قومی اسمبلی کی سپورٹس سے متعلق سٹینڈنگ کمیٹی نے اپنے اجلاس میں پاکستان کرکٹ بورڈ سے ان کرکٹرز کو دی گئی سزاؤں پر نظرثانی کے لیے کہا تھا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین اعجازبٹ نے کپتان اور ممکنہ کھلاڑیوں کے ناموں کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ یونس خان اور شعیب ملک کی ٹیم میں شمولیت ایک رکنی ٹریبونل سے کلیئرنس سے مشروط ہے۔

انہوں نے کہا کہ چونکہ محمد یوسف ریٹائر ہوگئے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ وہ کوچنگ کے سلسلے میں کینیڈا جارہے ہیں لہذا ان کے نام پر غور نہیں ہوا۔

شاہد آفریدی

شاہد آفریدی ایشا کپ کے لیے پہلے ہی کپتان مقرر کیے جاچکے ہیں

کراچی سے ہمارے نامہ نگار عبدالرشید شکور کا کہنا ہے کہ فاسٹ بولر شعیب اختر بھی پاکستان کرکٹ بورڈ کا اعتماد حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئے ہیں جنہوں نےآخری بار مئی دو ہزار نو میں بین الاقوامی کرکٹ کھیلی تھی اور اس کے بعد سے وہ فٹنس اور پاکستان کرکٹ بورڈ کے ساتھ عدالتی جنگ کی وجہ سے ٹیم سے باہر تھے

ایشیا کپ پندرہ سے چوبیس جون تک سری لنکا میں کھیلا جائے گا۔

پاکستانی ٹیم انگلینڈ کے دورے میں آسٹریلیا کے خلاف دو ٹیسٹ اور دو ٹوئنٹی ٹوئنٹی میچز کھیلنے کے علاوہ انگلینڈ کےخلاف چار ٹیسٹ پانچ ون ڈے اور دو ٹوئنٹی ٹوئنٹی بھی کھیلے گی۔

واضح رہے کہ شاہد آفریدی نے چار سال قبل انگلینڈ کے خلاف اولڈ ٹریفرڈ ٹیسٹ کے بعد یہ کہہ کر ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لے لی تھی کہ وہ اپنی تمام تر توجہ محددو اوورز کی کرکٹ پر مرکوز کرنا چاہتے ہیں تاہم پاکستانی کرکٹ کی موجودہ بحرانی صورتحال دیکھتے ہوئے انہوں نے چند روز قبل باضابطہ طور پر ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی دوبارہ دستیابی ظاہر کردی تھی۔

دورۂ آسٹریلیا میں پاکستانی ٹیم کی بدترین کارکردگی کے بعد تجزیہ نگار اور سابق ٹیسٹ کرکٹرز یہ خیال ظاہر کر رہے تھے کہ موجودہ حالات میں شاہد آفریدی تینوں طرز کی کرکٹ میں قیادت کے لیے موزوں ترین ہیں۔

اس دورے میں شاہد آفریدی نے آخری ون ڈے میں ٹیم کی قیادت کی تھی لیکن بال ٹمپرنگ کے نتیجے میں انہیں دو ٹوئنٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میچوں میں پابندی کی سزا کا سامنا کرنا پڑا تھا تاہم اس کے بعد انہوں نے ورلڈ ٹوئنٹی ٹوئنٹی میں کپتانی کی۔

شاہد آفریدی تین سال میں پاکستانی ٹیسٹ ٹیم کی قیادت کرنے والے چوتھے کرکٹر ہیں ۔ان سے قبل شعیب ملک۔ یونس خان اور محمدیوسف مختلف وجوہات کے تحت کپتانی سنبھال کر چھوڑ چکے ہیں یا انہیں ان کے عہدے سے ہٹایا جاچکا ہے۔

شاہد آفریدی نے منگل کو پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین اعجاز بٹ سے ملاقات کی جس میں انہیں کپتانی دیئے جانے کی نوید سنائی گئی جس کے بعد انہوں نے سلیکشن کمیٹی کے طویل اجلاس میں بھی شرکت کی جن میں ممکنہ کھلاڑیوں کے ناموں کو حتمی شکل دی گئی۔

اعلان کردہ ممکنہ کھلاڑی یہ ہیں۔ شاہد آفریدی، سلمان بٹ، عمران فرح، یاسرحمید، خرم منظور، شاہ زیب حسن، اظہرعلی، عظیم گھمن، یونس خان، شعیب ملک، عمراکمل، فیصل اقبال، فواد عالم، حسن رضا، اسد شفیق، عمرامین، عامرسجاد، محمد حفیظ، عبدالرزاق، یاسرعرفات، عمرگل، شعیب اختر، محمد آصف، محمد عامر، محمد سمیع، وہاب ریاض، محمد عرفان، تنویراحمد، اعزاز چیمہ، دانش کنیریا، عبدالرحمن، سعید اجمل، ذوالفقار بابر، کامران اکمل اور ذوالقرنین حیدر شامل ہیں۔

[an error occurred while processing this directive]

BBC navigation

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔