فٹبال: انیسویں عالمی کپ کا جوش

Image caption فیفا نے جنوبی افریقہ میں منعقد ہونے والے ورلڈ کپ فٹ بال ٹورنامنٹ کی ریکارڈنگ کے لیے پہلی بار تھری ڈی کیمرے بھی استعمال کرنے کا فیصلہ کیا ہے

کھیلوں کی دنیا کے سب سے بڑے مقابلے یعنی انیسویں ورلڈ کپ فٹبال ٹورنامنٹ کا آغاز گیارہ جون سے جنوبی افریقہ میں ہو رہا ہے۔

رواں برس منعقد ہونے والے فٹبال کے عالمی کپ کے لیے بتیس ٹیمیں عالمی مقابلوں تک پہنچنے میں کامیاب ہوئی ہیں جنھیں آٹھ گروپوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔

جنوبی افریقہ کے شہر کیپ ٹاؤن میں ہونے والی ایک تقریب میں قرعہ اندازی کے ذریعے اس عالمی مقابلے میں شریک بتیس ٹیموں کے ڈراز کا اعلان کیا گیا ہے۔

Image caption میراڈونا نے ارجنٹیا کو سنہ انیس سو چھیاسی کا ورلڈ کپ جتوانے میں اہم کردار ادا کیا تھا

ڈراز کے مطابق گروپ اے میں میزبان جنوبی افریقہ، میکسیکو، یوراگوائے اور فرانس کی ٹیمیں شامل ہیں اور اسی گروپ کی دو ٹیموں جنوبی افریقہ اور میکسیکو کے درمیان گیارہ جون کو ہونے والے میچ سے فٹبال کے اس عالمی میلے کا آغاز ہوگا۔

گروپ بی میں ارجنٹینا، نائجیریا، جنوبی کوریا اور یونان کو رکھا گیا ہے جبکہ گروپ سی انگلینڈ، امریکہ، الجیریا اور سلوینیا پر مشتمل ہے۔

گروپ ڈی میں جرمنی، آسٹریلیا، سربیا اور گھانا شامل ہیں۔ گروپ ای میں ہالینڈ، ڈنمارک، جاپان اور کیمرون کو جگہ ملی ہے جبکہ گروپ ایف میں دفاعی چیمپئن اٹلی، پیراگوائے، نیوزی لینڈ اور سلوواکیا شامل ہیں۔

Image caption پیلے کا شمار فٹبال کے لیجنڈز میں ہوتا ہے

ان آٹھ گروپوں میں سے سب سے مشکل گروپ، گروپ جی کو تصور کیا جا رہا ہے اور اس ’گروپ آف ڈیتھ‘ میں پانچ بار کی عالمی چیمپئن برازیل، شمالی کوریا، آئیوری کوسٹ اور پرتگال شامل ہیں۔ آخری گروپ گروپ ایچ ہے جس میں یورپی چیمپئن سپین، سوئٹزرلینڈ، ہنڈارس اور چلی شامل ہیں۔

ورلڈ کپ میں اس مرتبہ انگلینڈ کو ایک نسبتاً آسان گروپ ملا ہے۔ اس حوالے سے انگلش ٹیم کے مینیجر فیبیو کپیلو کا کہنا ہے کہ ’یہ برا نہیں ہے۔ ہم حال ہی میں امریکہ اور سلوینیا کے خلاف کھیلے اور جیتے ہیں لیکن جنوبی افریقہ میں ان سے مقابلہ مختلف ہوگا۔‘

واضح رہے کہ فٹ بال کی عالمی تنظیم فیڈریشن آف انٹرنیشنل فٹ بال ایسوسی ایشن (فیفا) نے جنوبی افریقہ میں منعقد ہونے والے ورلڈ کپ فٹ بال ٹورنامنٹ کی ریکارڈنگ کے لیے پہلی بار تھری ڈی کیمرے بھی استعمال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

Image caption ڈیوڈ بیہکم کا شمار برطانیہ کے مشہور فٹبالرز میں ہوتا ہے۔

فیفا کا کہنا ہے کہ ورلڈ کپ فٹبال ٹورنامنٹ کے پچیس میچوں کی ریکارڈنگ تھری ڈائمنشنل کیمروں کے ذریعے کی جائے گی۔ فیفا کے ابتدائی طور پر ان میچوں کی فوٹیج دنیا کے سات شہروں میں عوامی مقامات پر دکھائی جائے گی۔

گیارہ جون سے شروع ہونے والے مقابلوں میں کون سی ٹیم جیتے گی اس بارے میں پیش گوئی کرنا بہت مشکل ہے۔ گزشتہ ورلڈ کپ مقابلے جیتنے والی ٹیموں کی تفصیل کچھ اس طرح ہے۔

سنہ دو ہزار چھ ،اٹلی

جرمنی میں منعقد ہونے والے سنہ دو ہزار چھ کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں اٹلی نے فرانس کو فائنل میں پینلٹی ککس پر تین کے مقابلے میں پانچ گول سے شکست دے کر چوتھی بار یہ اعزاز اپنے نام کیا تھا۔ اٹلی اس سے قبل تین مرتبہ سنہ انیس سو چونتیس، انیس سو اڑتیس اور انیس سو بیاسی میں فٹبال کا عالمی کپ جیت چکا ہے۔ اٹلی برازیل کے بعد دوسری ٹیم ہے جس نے یہ مقابلے چار مرتبہ جیتے ہیں۔ اٹلی کی ٹیم اس مرتبہ اپنے اعزاز کا دفاع کرے گی۔

سنہ دو ہزار دو ،برازیل

کوریا اور جاپان میں منعقد ہونے والے سنہ دو ہزار دو کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں برازیل کی ٹیم نے جرمنی کی ٹیم کو صفر کے مقابلے میں دو گول سے شکست دے کر پانچویں بار یہ اعزاز اپنے نام کیا تھا۔ برازیل اس سے قبل انیس سو چورانوے، انیس سو ستر، انیس سو باسٹھ اور انیس سو اٹھاون میں فٹبال کا عالمی کپ جیت چکا ہے۔

سنہ انیس سو اٹھانوے، فرانس

فرانس میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو اٹھانوے کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں فرانس نے برازیل کی ٹیم کو صفر کے مقابلے میں تین گول سے شکست دے پہلی بار چیمئپینن بننے کا اعزاز حاصل کیا۔

سنہ انیس سو چورانوے،برازیل

امریکہ میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو چورانوے کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں برازیل کی ٹیم نے اٹلی کو پینلٹی ککس پر دو کے مقابلے میں تین گول سے شکست دے کر چوتھی بار یہ ٹائٹل اپنے نام کیا تھا۔

سنہ انیس سو نوے، جرمنی

اٹلی میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو نوے کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں جرمنی کی ٹیم نے ارجنٹینا کو صفر کے مقابلے میں ایک گول سے شکست دے کر تیسری بار یہ اعزاز اپنے نام کیا۔ اِس سے قبل جرمنی نے سنہ انیس سو چوہتر اور انیس سو چون میں یہ اعزاز جیتا تھا۔

سنہ انیس سو چھیاسی، ارجنٹینا

میکسیو میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو چھیاسی کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں ارجنٹینا کی ٹیم نے جرمنی کو دو کے مقابلے میں تین گول سے شکست دے کر دوسری بار یہ اعزاز جیتا تھا۔ اِس سے قبل ارجنٹینا نے سنہ انیس سو اٹھتر میں پہلی بار یہ ٹورنامنٹ جیتا تھا۔

سنہ انیس سو بیاسی، اٹلی

سپین میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو بیاسی کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں اٹلی کی ٹیم نے جرمنی کو ایک کے مقابلے میں تین گول سے شکست دے کر تیسری بار یہ اعزاز جیتا تھا۔ اِ س سے قبل اٹلی نے سنہ انیس سو اڑتیس اور انیس سو چونتیس میں یہ اعزاز جیتا تھا۔

سنہ انیس سو اٹھتر، ارجنٹینا

ارجنٹینا میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو اٹھتر کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں میزبان ارجنٹینا نے ہالینڈ کو ایک کے مقابلے میں تین گول سے شکست دے کر پہلی بار یہ اعزاز جیتا تھا۔

سنہ انیس سو چوہتر، جرمنی

جرمنی میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو چوہتر کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں میزبان ٹیم نے ہالینڈ کو ایک کے مقابلے میں دو گول سے شکست دے کر دوسری بار یہ اعزاز جیتا تھا۔ اِ س سے قبل جرمنی کی ٹیم نے پہلی بار سنہ انیس سو چون میں یہ اعزاز جیتا تھا۔

سنہ انیس سو ستر، برازیل

میکسیکو میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو ستر کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں برازیل کی ٹیم نے اٹلی کو ایک کے مقابلے میں چار گول سے شکست دے کر تیسری بار یہ اعزاز جیتا تھا۔ اِس سے قبل برازیل کی ٹیم نے سنہ انیس سو باسٹھ اور انیس سو اٹھاون میں یہ اعزاز اپنے نام کیا تھا۔

سنہ انیس سو چھیاسٹھ، انگلینڈ

انگلینڈ میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو چھیاسٹھ کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں انگلینڈ نے جرمنی کی ٹیم کو دو کے مقابلے میں چار گول سے شکست دے کر پہلی بار یہ اعزاز اپنے نام کیا تھا۔

سنہ انیس سو باسٹھ، برازیل

چلی میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو باسٹھ کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں برازیل کی ٹیم نے چیکوسلاواکیہ کو ایک کے مقابلے میں تین گول سے شکست دے کر دوسری بار یہ اعزاز اپنے نام کیا۔

سنہ انیس سو اٹھاون، برازیل

سویڈن میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو اٹھاون کے عالمی کپ کے فائنل میں برازیل کی ٹیم نے میزبان ٹیم کو دو کے مقابلے میں پانچ گول سے شکست دے کر پہلی بار یہ ٹورنامنٹ جیتا تھا۔

سنہ انیس سو چون، جرمنی

سوئٹزرلینڈ میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو چون کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں جرمنی کی ٹیم نے ہنگری کو دو کے مقابلے میں تین گول سے شکست دے کر پہلی بار یہ اعزاز جیتا تھا۔

سنہ انیس سو پچاس، یوراگوئے

برازیل میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو پچاس کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں یوراگوئے نے برازیل کو شکست دے کر دوسری بار یہ اعزاز اپنے نام کیا تھا۔ اِس سے پہلے یوراگوئے نے سنہ انیس سو تیس میں منعقد ہونے والے پہلے فٹبال عالمی کپ کو جیتنے کا اعزاز حاصل کیا تھا۔

سنہ انیس سو چھیالیس، چالیس

دوسری جنگِ عظیم کے باعث سنہ انیس سو چھیالس اور انیس سو بیالس میں فٹبال کا عالمی کپ منعقد نہیں ہو سکا تھا۔

سنہ انیس سو اڑتیس، اٹلی

فرانس میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو اڑتیس کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں اٹلی کی ٹیم نے ہنگری کو دو کے مقابلے میں چار گول سے شکست دے کرمسلسل دوسری بار فٹبال کا عالمی کپ جیتا تھا۔

سنہ انیس سو چونتیس، اٹلی

اٹلی میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو چونتیس کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں میزبان ٹیم نے چیکوسلاواکیہ کو ایک کے مقابلے میں دو گول سے شکست دے کر پہلی بار فٹبال کا عالمی کپ اپنے نام کیا تھا۔

سنہ انیس سو تیس، یوارگوئے

یوراگوئے میں منعقد ہونے والے سنہ انیس سو تیس کے فٹبال عالمی کپ کے فائنل میں میزبان ٹیم نے ارجنٹینا کو دو کے مقابلے میں چار گول سے شکست دے کر پہلا چیمپئن بننے کا اعزاز حاصل کیا تھا۔

فیفا کی جانب سے ہر چار سال بعد اِس ٹورنامنٹ کا انعقاد کیا جاتا ہے۔ فٹبال کا عالمی کپ دنیا میں سب سے زیادہ دیکھا جانے والا کھیل ہے۔ ایک اندازے کے مطابق جرمنی میں منعقد ہونے والے سنہ دو ہزار چھ کے عالمی کپ کے فائنل میچ کو تقریباً سات سو پندرہ ملین افراد نے پر دیکھا تھا۔

فٹبال کے عالمی کپ کا باقاعدہ آغاز سنہ انیس سو تیس میں ہوا اور یہ ہر چار برس کے بعد منعقد ہوتا ہے۔ یوراگوئے کی ٹیم نے پہلے فٹبال کے عالمی کپ کو جیتنے کا اعزاز حاصل کیا تھا۔ یوراگوئے نے فائنل میں ارجنٹینا کی ٹیم کو دو کے مقابلے میں چار گول سے شکست دے تھی۔

اسی بارے میں