رافیل ندال نے فرنچ اوپن جیت لیا

روبن سوڈرلنگ
Image caption ندال نے کہا کہ اگر میں سوڈرلنگ کے خلاف اپنا بہترین میچ نہ کھیلتا تو انہیں ہرانا ناممکن ہوتا۔

رافیل ندال نے پانچویں بار فرنچ اوپن ٹینس جیت کر نہ صرف اس مقابلے کے عالمی ریکارڈ کی طرف ایک قدم اور آگے بڑھا لیا بلکہ گزشتہ سال سویڈن کے روبن سوڈرلنگ سے اپنی شکست کا کا بدلہ بھی لے لیا ہے۔

دو گھنٹے اٹھارہ منٹ تک جاری رہنے والے اس مقابلے میں ندال نے نہ صرف اپنے آٹھوں بریک پوانٹ بچائے بلکہ تین مسلسل سیٹ 4-6، 2-6، 4-6 سے کامیابی حاصل کی اور خود کو ساتویں گرینڈ سلام کا حق دار بھی ثابت کر دیا۔

ٹرافی کے تقریب کے دوران انہوں نے سوڈرلنگ سے کہا ’میں تمہارے خلاف اپنا بہترین میچ کھیلا ہے اور اگر ایسا نمہ ہوتا تو تمہیں ہرانا میرے لیے کبھی ممکن نہیں ہو سکتا تھا‘۔

اس کے بعد ندال نے تماشائوں سے فرانسیسی میں کہا کہ ’آج میرے کرئر کا سب سے جذباتی دن ہے‘۔

ندال کی اس فتح نے ان کے لیے یہ ممکن بنا دیا ہے کہ وہ پیر کو ٹینس کی دنیا کے نمبر ون کی پوزیشن دوبارہ حاصل کر لیں اور اس طرح راجر فیڈرر پیٹ سمپرس کا دو سو چھیاسی ہفتے تک نمبر کی پوزیشن کا ریکارڈ توڑ نہیں سکیں۔

اسی بارے میں