’کرکٹ بورڈ کی پیشکش قبول نہیں کی‘

یونس خان
Image caption یونس خان نے کہا کہ وہ چاہتے تھے کہ اپنے اوپر عائد پابندی کو باوقار انداز سے ختم کرائیں

سابق کپتان یونس خان کا کہنا ہے کہ وہ بے قصور تھے اسی لیے پاکستان کرکٹ بورڈ کی مصالحتی پیشکش قبول نہیں کی اور اپنے موقف پر ڈٹے رہے اور ایک رکنی ٹریبونل سے ہی اپنی پابندی ختم کرائی۔

واضح رہے کہ جسٹس ( ریٹائرڈ) عرفان قادر پر مشتمل ایک رکنی ٹریبونل نے گزشتہ دنوں یونس خان پر عائد غیرمعینہ مدت کی پابندی ختم کی ہے اور وہ ان دنوں انگلینڈ میں سرے کاؤنٹی کی طرف سے کھیل رہے ہیں۔

یونس خان نے بی بی سی کو دیئے گئے انٹرویو میں کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے انہیں مصالحتی پیشکش کی تھی لیکن انہوں نے اسے مسترد کردیا کیونکہ ان کا موقف یہ تھا کہ جب انہوں نے کوئی غلطی نہیں کی تو اس طرح کی آفر کیوں قبول کریں۔انہیں خوشی ہے کہ ان پر پابندی کسی الزام یا جرمانے کے بغیر ختم ہوئی ہے۔

یونس خان نے کہا کہ وہ چاہتے تھے کہ اپنے اوپر عائد پابندی کو باوقار انداز سے ختم کرائیں کیونکہ اگر ان پر پابندی ختم نہ ہوتی تو انہیں زندگی بھر چبھن رہتی اور افسوس ہی رہتا کہ انہوں نے نو دس سال پاکستان کے لیے کرکٹ کھیلی ورلڈ ٹوئنٹی ٹوئنٹی کے کپتان بھی رہے اور آخر میں پابندی کے ساتھ کرکٹ ختم ہوئی لیکن اب کم ازکم یہ اطمینان ہے کہ جتنی بھی کرکٹ باقی ہے ملک کے لیے دوبارہ کھیلیں اور اس کی جیت میں ان کا بھی حصہ ہو۔

اس سوال پر کہ سینیئر کھلاڑی آپ کےخلاف کیوں ہوگئے تھے؟ یونس خان نے کہا کہ بحیثیت کپتان انہوں نے متعدد نوجوان کھلاڑیوں کو موقع دیا اور وہ مستقل ٹیم میں کھیلنے لگے تھے لہذا ہوسکتا ہے کہ کچھ سینیئر کھلاڑیوں کو ٹیم میں اپنی جگہ خطرے میں محسوس ہونے لگی ہو اس کے علاوہ اور کوئی دوسری وجہ انہیں سمجھ میں نہیں آتی ۔

یونس خان نے کہا کہ انہوں نے جتنی بھی کرکٹ کھیلی باوقار انداز سے کھیلی ہے اور آف دی فیلڈ کسی طرح کی منفی سرگرمیوں میں شامل نہیں رہے اور نہ ہی جوڑ توڑ کرنے کے لیے کھلاڑیوں کا گروپ بنایا جس کا انہیں مشورہ بھی دیا جاتا رہا لیکن وہ اپنے اچھے اور برے وقتوں میں اکیلے ہی نظر آئے ہیں۔

یونس خان سے جب پوچھا گیا کہ جن کرکٹرز نے آپ کے خلاف قرآن پر حلف اٹھایا ان کے ساتھ جب دوبارہ آنکھیں چار ہونگی تو کیا ہوگا؟ تو سابق کپتان نے جواب دیتے ہوئے کہاکہ انہوں نے کسی کے ساتھ کوئی ناانصافی نہیں کی لہذا انہیں کسی کے ساتھ آنکھیں ملانے میں کوئی مشکل نہیں ہوگی جن کھلاڑیوں نے ان کے ساتھ کچھ کیاہے تو انہیں آنکھیں ملانے میں مسئلہ ہوسکتا ہے انہیں نہیں۔

اسی بارے میں