پاکستان اور انڈیا: ایک بڑے میچ کا عزم

پاکستان اور انڈی
Image caption پاکستان اور بھارت کی کرکٹ ٹیمیں نو ماہ بعد انٹرنیشنل کرکٹ میں دوبارہ مقابل ہو رہی ہیں۔

ایشیا کپ کے شائقین کو جس میچ کا شدت سے انتظار ہے وہ سنیچر کو کھیلا جائے گا۔

پاکستان اور بھارت کی کرکٹ ٹیمیں نو ماہ بعد انٹرنیشنل کرکٹ میں دوبارہ مقابل ہو رہی ہیں اور دونوں کپتان مہندر سنگھ دھونی اور شاہد آفریدی اس بڑے میچ میں بڑی کارکردگی دکھانے کے لیے تیار ہیں۔

دونوں کے درمیان آخری بار گزشتہ ستمبر میں جنوبی افریقہ میں کھیلی گئی چیمپئنز ٹرافی میں مقابلہ ہوا تھا جس میں پاکستان نے شعیب ملک کی سنچری اور محمد یوسف کی نصف سنچری کی بدولت کامیابی حاصل کی تھی۔

پاکستانی ٹیم نے جمعہ کو رانگیری سٹیڈیم کے باہر نیٹ میں سخت ٹریننگ کی ۔

ٹریننگ کے بعد کوچ وقار یونس نے بی بی سی کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ ٹیم مثبت سوچ کے ساتھ میدان میں اترے گی۔ یہ درست ہے کہ پہلا میچ ہارنے کے بعد ٹیم کے لیے معاملہ اب یا کبھی نہیں والا ہے لیکن کوشش ہوگی کہ میچ جیت کر ٹورنامنٹ میں موجود رہا جا سکے۔

انہوں نے کہا کہ یہ میچ پاکستانی کرکٹ اور بحیثیت کوچ خود ان کے لیے سخت امتحان ہے۔

وقار یونس نے کہا کہ دمبولا میں ڈے اینڈ نائٹ کرکٹ آسان نہیں ہے۔ اس وکٹ پر کبھی گیند رک کر آتی ہے اور کبھی موو ہوتی ہے یہ ڈبل پیس وکٹ ہے۔

انہوں نے کہا کہ ٹریننگ دوران فیلڈنگ پر خاص توجہ دی گئی ہے۔

پاکستانی ٹیم میں ایک تبدیلی شاہ زیب حسن کی جگہ عمران فرحت کی شکل میں متوقع ہے۔

بھارتی ٹیم میں اشیش نہرا کی جگہ اشوک ڈنڈا کو موقع ملنے کا امکان ہے۔

اسی بارے میں