آخری وقت اشاعت:  منگل 22 جون 2010 ,‭ 18:32 GMT 23:32 PST

ارجنٹائن گروپ بی میں اول

تازہ ترین سکور اور گروپ ٹیبلز کے لیے آپ کے پاس جاواسکرپٹ ہونا چاہیئے

فٹبال ورلڈ کپ کے گروپ بی کا ایک میچ پولوکوانے کے میدان میں ارجنٹائن اور یونان کے درمیان میچ جاری ہے جس میں ارجنٹائن نے دو گول سے برتری حاصل کر لی ہے۔

کلِک فٹبال ورلڈ کپ پر بی بی سی اردو ڈاٹ کام کا خصوصی ضمیمہ

پہلا گول دوسرے ہاف کے اکیسویں منٹ میں ارجنٹائن کے کھلاڑی مارٹن ڈیمیکلیس نے کیا جبکہ دوسرا گول میسی کے ایک خوبصورت پاس پر پالیرمو نے کیا۔

کھیل کا پہلا ہاف ختم ہونے تک دونوں ٹیموں نے کوئی گول نہیں کیا تھا۔ اگرچہ دونوں ٹیموں کی طرف سے اچھے کھیل کا مظاہرہ کیا گئے اور ایک دوسرے کے گول پوسٹ پر حملے کیے گئے لیکن قسمت نے کسی کا ساتھ نہ دیا۔

اس میچ میں لیونل میسی کو ارجنٹائن کا کپتان بنایا گیا ہے۔

انگلینڈ، فرانس اور اٹلی کے برعکس ارجنٹائن بہت سٹائل کے ساتھ اپنے پہلے دو میچ جیتا ہے۔

ارجنٹائن اگر یہ میچ ہار بھی جاتا تو تب بھی وہ اگلے راؤنڈ کے لیے کوالیفائی کر جاتا لیکن ارجنٹائن نے اپنی فتح کو سو فیصد رکھنے کو ہی ترجیح دی۔

ارجنٹائن نے اس میچ میں اپنے کچھ سینیئر کھلاڑیوں کو نہیں کھلایا تھا اور انہیں آرام دیا گیا تھا۔

گروپ بی میں ٹیموں کی پوزیشن

ارجنٹائن: اگر ارجنٹائن ڈرا کرتا تو تب بھی وہ اپنے گروپ میں اول آتا۔

اگر وہ ہار بھی جاتا تو بھی اگلے راؤنڈ کے لیے کوالیفائی کر جاتا۔

یونان: یونان اگر ڈرا کرتا اور جنوبی کوریا نائجیریا سے ہار جاتا تو اگلے راؤنڈ کے لیے کوالیفائی کرتا لیکن ایسا نہیں ہوا اور جنوبی کوریا نے نائجیریا سے میچ برابر کر لیا۔

نائجریا: نائجیریا کے اگلے راؤنڈ میں آنے کا دارومدار ان کی جیت اور ارجنٹائن کے ہاتھوں یونان کی ہار پر تھا۔ یہ دونوں چیزیں نہیں ہوئیں۔

جنوبی کوریا: جنوبی کوریا اگلے راؤنڈ میں نائجیریا سے میچ برابر کر کے اور ارجنٹائن کے ہاتھوں یونان کے شکست کے بعد ہی آ سکا۔

[an error occurred while processing this directive]

BBC navigation

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔