نائجیریا کے لیے فیفا کی ڈیڈ لائن

Image caption نائجیرین ٹیم پہلے ہی مرحلے میں ورلڈ کپ سے باہر ہوگئی تھی

بین الاقوامی فٹبال فیڈریشن فیفا نے نائجیریا کی حکومت کی جانب سے اپنی فٹبال ٹیم پر عائد کی جانے والی دو سالہ پابندی پیر کی شام پانچ بجے تک نہ اٹھائی جانے کی صورت میں نائجیریا کو عالمی فٹبال سے خارج کرنے کا اعلان کیا ہے۔

نائجیریا کے صدر نے فٹبال ورلڈ کپ میں ناقص کارکردگی پر اپنی ٹیم کے عالمی مقابلوں میں حصہ لینے پر دو سال کی پابندی لگا دی تھی۔

فیفا کی جانب سے نائجیرین صدر گڈلک جوناتھن کو لکھے گئے خط میں ان سے یہ پابندی اٹھانے کا مطالبہ کیا گیا ہے جبکہ نائجیرین ایوانِ نمائندگان نے بھی عالمی پابندی کے خدشے کے پیشِ نظر ایک قرارداد پیش کی ہے جس میں صدر سے اپنا فیصلہ بدلنے کو کہا گیا ہے۔

نائجیرین حکومت نے بدھ کو اعلان کیا تھا کہ نائجیرین فٹبال فیڈریشن کو تحلیل کر کے فٹبال امور کا انتظام ایک عبوری بورڈ کو سونپ دیا جائے گا۔

تاہم فیفا کے قوانین کے تحت اس کے رکن ممالک کی حکومتیں فٹبال کے معاملات میں مداخلت نہیں کر سکتیں اور اگر ایسا ہو تو اس ملک کی رکنیت معطل کر دی جاتی ہے۔

فیفا کے کمیونیکیشن ڈائریکٹر نکولس مینگوٹ کے مطابق ’فیفا نے نائجیرین فٹبال فیڈریشن کو ایک خط لکھا ہے جس میں انہیں بتایا گیا ہے کہ نائجیرین حکومت کے پاس فیفا اور افریقی فٹبال فیڈریشن کے مقابلوں میں نائجیرین ٹیم کی شرکت پر عائد پابندی اٹھانے کے لیے پیر کی شام چھ بجے تک کا وقت ہے‘۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ خط میں یہ بھی واضح کیا گیا ہے کہ فیفا نائجیرین حکومت کی جانب سے بنائی گئی انتظامی کمیٹی کو تسلیم نہیں کرتی۔

اگر نائجیریا کی رکنیت ختم ہو جاتی ہے تو وہ نہ تو افریقی مقابلوں میں حصہ لے سکتا ہے اور نہ ہی اسے فٹبال کی ترویج کے لیے فیفا کی جانب سے کوئی مالی مدد مل سکے گی۔

اسی بارے میں