آخری وقت اشاعت:  بدھ 14 جولائ 2010 ,‭ 15:43 GMT 20:43 PST

’ہال آف فیم میں شمولیت باعثِ فخر‘

عمران خان: تصویر بشکریہ آئی سی سی

ہارون لوگارٹ نے عمران خان کو اعزازی ٹوپی دے کر ہال آف فیم میں شامل کیا

پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کھلاڑی اور سنہ انیس سو بانوے میں عالمی کپ جیتنے والی پاکستانی ٹیم کے قائد عمران خان کا کہنا ہے کہ آئی سی سی کے ہال آف فیم میں شمولیت ان کے لیے ایک اعزاز کی بات ہے۔

عمران خان ان چار پاکستانی کھلاڑیوں میں سے ایک ہیں جنہیں آئی سی سی ہال آف فیم میں شامل کیا گیا ہے۔

عمران خان، حنیف محمد اور جاوید میانداد کے نام اس ہال آف فیم میں شامل کیے گئے ابتدائی پچپن کھلاڑیوں میں شامل تھے جبکہ وسیم اکرم کو سنہ 2009 کے اواخر میں اس اعزازی فہرست میں جگہ دی گئی ہے۔

آئی سی سی کی جانب سے جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق عمران خان کو ہال آف فیم میں شامل کرنے کی باقاعدہ تقریب بدھ کو لارڈز کرکٹ گراؤنڈ پر منعقد ہوئی۔ اس تقریب میں آئی سی سی کے چیف ایگزیکٹو ہارون لوگارٹ نے انہیں اعزازی ٹوپی دے کر ہال آف فیم میں شامل کیا۔ اس تقریب میں پاکستان کرکٹ بورڈ کے سربراہ اعجاز بٹ بھی موجود تھے۔

اس موقع پر عمران خان کا کہنا تھا کہ ’آئی سی سی ہال آف فیم میں شمولیت اور پاکستان کے لیے کرکٹ کے شعبے میں میری خدمات کا اعتراف میرے لیے بڑا اعزاز ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ ’میں نے اپنے کرکٹ کیریئر میں سنہ بانوے کے ورلڈ کپ سمیت بہت کچھ حاصل کیا لیکن حنیف محمد اور میانداد کے ہمراہ ہال آف فیم کے ابتدائی پچپن کھلاڑیوں میں شامل ہونا میرے لیے باعثِ فخر ہے‘۔

میں نے اپنے کرکٹ کیریئر میں سنہ بانوے کے ورلڈ کپ سمیت بہت کچھ حاصل کیا لیکن حنیف محمد اور میانداد کے ہمراہ ہال آف فیم کے ابتدائی پچپن کھلاڑیوں میں شامل ہونا میرے لیے باعثِ فخر ہے

عمران خان

آئی سی سی کے سربراہ ہارون لوگارٹ نے کہا کہ ’ آسٹریلیا اور پاکستان کے مابین جاری اس تاریخی ٹیسٹ میچ کے دوران کرکٹ کی دنیا کے حقیقی لیجنڈ عمران خان کو آئی سی سی ہال آف فیم کی ٹوپی دینا میرے لیے اعزاز کی بات ہے۔

عمران خان نے اپنے کیرئر کے دوران اٹھاسی ٹیسٹ میچ کھیلے جن میں سے اڑتالیس میں انہوں نے پاکستان کی قیادت کی۔ اس دوران جہاں انہوں نے تین سو باسٹھ وکٹیں حاصل کیں وہیں تین ہزار سات سو آٹھ رن بھی بنائے۔

عمران خان کی قیادت میں ہی پاکستان نے پہلی مرتبہ سنہ انیس سو ستاسی میں انگلینڈ کو اس کی سرزمین پر ٹیسٹ سیریز میں شکست دی تھی۔

ایک روزہ کرکٹ میں عمران خان نے انیس سو بیاسی سے انیس سو بانوے کے درمیان ایک سو پچھہتر میچ کھیلے جن میں سے ایک سو انتالیس میں قیادت کا تاج ان کے سر پر سجا تھا۔ ون ڈے میں عمران خان نے آل راؤنڈ کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک سو بیاسی وکٹیں لیں اور تین ہزار سات سو نو رن سکور کیے۔

عمران خان کی قیادت میں ہی پاکستان نے کرکٹ ورلڈ کپ کی تاریخ میں اپنا پہلا اور تاحال واحد ٹورنامنٹ سنہ 1992 میں جیتا تھا۔

[an error occurred while processing this directive]

BBC navigation

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔