مینیجر بننے میں کوئی دلچسپی نہیں:بیکھہم

Image caption میں اب بھی یہ سمجھتا ہوں کہ میں کھیل سکتا ہوں:بیکھہم

انگلینڈ فٹبال ٹیم کے سابق کپتان ڈیوڈ بیکھہم کا کہنا ہے کہ وہ انگلش ٹیم کے مینیجر کی ذمہ داریاں سنبھالنے میں دلچسپی نہیں رکھتے تاہم وہ سنہ 2012 کے یورو مقابلوں میں حصہ لینا چاہتے ہیں۔

پینتیس سالہ بیکھہم چوٹ کے وجہ سے حالیہ ورلڈ کپ میں حصہ نہیں لے سکے تھے تاہم وہ انگلش مینیجر فیبیو کپیلو کی ٹیم کے ایک غیر سرکاری رکن کے طور پر ان مقابلوں میں ذمہ داریاں نبھاتے رہے تھے۔

بی بی سی سپورٹس سے بات کرتے ہوئے ڈیوڈ بیکھہم نے کہا کہ ’فی الوقت میں کوچ یا مینیجر نہیں بننا چاہتا‘۔

انہوں نے کہا کہ ’میں مینجمنٹ کے حوالے سے زیادہ پرجوش نہیں اور نہ ہی میں نے اس بارے میں سوچا ہے۔ مجھے بچوں کی کوچنگ کرنا پسند ہے اور لوگ یہ جانتے ہیں۔ لیکن مینیجر بننا۔۔۔ نہیں۔ میں کچھ اور کرنے سے پہلے اپنے دیگر عزائم پورے کرنا پسند کروں گا‘۔

ڈیوڈ بیکھہم کا کہنا تھا کہ ’جب میں کھیلنا چھوڑ دوں گا تب بھی میں کسی نہ کسی طریقے سے فٹبال سے جڑا رہنا چاہوں گا لیکن مجھے نہیں لگتا کہ یہ مینیجر کے روپ میں ہوگا‘۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ حالیہ ورلڈ کپ میں انگلینڈ کی شکست کے ذمہ دار صرف کھلاڑی ہیں اور مینیجر کپیلو کو اس کا ذمہ دار قرار نہیں دیا جا سکتا۔ انہوں نے کہا کہ ’اس کی ذمہ داری صرف کھلاڑیوں پر عائد ہوتی ہے اور کپیلو کا استعفٰی نہ دینا بغیر شک و شبہ کے ایک صحیح فیصلہ تھا‘۔

بیکھہم نے کہا کہ ’لڑکے اس بات کا اعتراف کر لیں گے اور ان میں سے کچھ کر بھی چکے ہیں کہ وہ مقابلوں میں اچھا نہیں کھیلے‘۔

ان کا کہنا تھا کہ وہ انگلینڈ کے لیے مزید کھیلنا چاہتے ہیں۔ ’میں دستبردار ہونے کو تیار نہیں لیکن اگر مجھے منتخب نہیں کیا جاتا تو مجھے اپنے ریکارڈ پر فخر ہے۔ لیکن میں اب بھی یہ سمجھتا ہوں کہ میں کھیل سکتا ہوں‘۔

اسی بارے میں