پاکستان کے تین کھلاڑی پندرہ رنز پر آؤٹ

پرائر
Image caption پرائر نے ایک سو دو رنز بنائے اور ناٹ آؤٹ رہے

پہلے ٹیسٹ کے تیسرے دن انگلینڈ کے چار سو پینتیس رنز کے جواب میں پاکستان کے تین کھلاڑی دوسری اننگز میں صرف پندرہ پر آؤٹ ہو گئے۔

انگلینڈ نے اپنی دوسری اننگز میں نو کھلاڑیوں کے نقصان پر دو سو باسٹھ رنز بنائے اور چار سو پینتیس رنز کر برتری پر اننگز ڈیکلئر کرنے کا اعلان کیا۔

پاکستان کی جانب سے عمران فرحت اور سلمان نے بیٹنگ کا آغاز کیا۔ سلمان بٹ آٹھ رنز بنا کر براڈ کی گیند پر کالنگ ووڈ کے ہاتھوں کیچ ہو گئے۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

سلمان کے بعد زاہد علی بیٹنگ کے لیے آیے اور کوئی رن بنائے بغیر براڈ کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہو گئے۔ پاکستان کے آؤٹ ہونے والے تیسرے کھلاڑی عمر امین تھے جو ایک رن بنا کر اینڈرسن کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہوئے۔ جب تیسرے دن کا کھیل ختم ہو تو محمد عامر کسی سکور کے بغیر اور عمران فرحت چھ رنز کے ساتھ کریز پر تھے۔

انگلینڈ کی جانب سے دوسرے اننگز میں سب سے زیادہ ایک سو دو رنز میٹ پرائر نے بنائے اور ناٹ آوٹ رہے۔

پاکستان کی جانب سے محمد آصف سب سے کامیاب بالر رہے اور انہوں نے دوسری اننگز میں ستتر رنز دے کر پانچ کھلاڑیوں کو آوٹ کیا جب کہ محمد عامر نے اکتالیس رنز دے کر تین اور عمر گل نے اکسٹھ رنز دے کر ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔ انگلینڈ کے این مورگن سرتہ رنز پر رن آؤٹ ہوئے۔

دوسری اننگز میں انگلینڈ کو پہلا نقصان اُس وقت اٹھانا پڑا جب صرف دو کے مجموعی سکور پر اینڈریو سٹراس بغیر کوئی سکور بنائے محمد عامر کی گیند پر آؤٹ ہوئے۔

اٹھارہ رنز کے مجموعی سکور پر ایلیسٹر کک بارہ رنز بنا کر محمد آصف کا شکار بنے۔

پینسٹھ رنز کے مجموعی سکور پر کیون پیٹرسن بائیس رنز بنا کر آؤٹ ہوئے

چھیاسٹھ رنز کے مجموعی سکور پر انگلینڈ کی چوتھی وکٹ گری جب ٹراٹ چھبیس رنز بنا کر آوٹ ہوئے۔

پاکستان کی جانب سے عمر گل نے دوسری اننگز میں تین جبکہ محمد عامر نے ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

اس سے قبل پاکستان کی پوری ٹیم انگلینڈ کے تین سو چون رنز کے جواب میں ایک سو بیاسی رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی تھی۔

سنیچر کو جب تیسرے روز کا کھیل شروع ہوا تو پاکستان کو فالو آن سے بچنے کے لیے مزید سات رنز درکار تھے۔

پاکستان کو فالو آن سے بچانے میں عمر گل نے اہم کردار کیا۔ انہوں نے محمد آصف کے ساتھ ملکر آخری وکٹ کے لیے پینتس رنز کی پارٹنر شپ قائم کی۔

عمرگل نے ذمہ داری کے ساتھ بیٹنگ کرتے ہوئے ٹیسٹ میچوں میں اپنی پہلی نصف سینچری بنائی۔ انہوں نے چالیس گیندوں پر آٹھ چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے باون رنز کی ناقابلِ شکست اننگز کھیلی۔

پاکستان کے پہلے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی کپتان سلمان بٹ تھے جو صرف ایک رن بنا کر اینڈرسن کی گیند پر آؤٹ ہوئے۔

اس کے بعد عمران فرحت انیس اور عمر امین دو رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ اس وقت ٹیم کا مجموعی سکور پینتیس رنز تھا۔

آؤٹ ہونے والے چوتھے کھلاڑی اظہر علی تھے جو چودہ رن بنا سکے۔ اس کے فوراً بعد عمر اکمل چار اور کامران اکمل صفر پر آؤٹ ہو گئے۔

سینتالیس کے مجموعی سکور پر پاکستان کے چھ کھلاڑی آؤٹ ہو چکے تھے۔

اس موقع پر شعیب ملک اور محمد عامر نے مل کر سکور میں اٹھاون رنز کا اضافہ کیا۔ سعیب ملک نے چھ چوکوں کی مدد سے اڑتیس رنز بنائے اور اینڈرسن کی گیند پر سٹراس کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوگئے۔ محمد عامر پچیس رنز بنا کر کیچ آؤٹ ہوئے۔

انگلینڈ کی جانب سے اینڈرسن نے پانچ، فِن نے تین اور کرس براڈ نے ایک وکٹ حاصل کی۔

اِس سے قبل انگلینڈ کی پوری ٹیم اپنی پہلی اننگز میں تین سو چون رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی تھی۔

جمعرات سے شروع ہونے والے اِس میچ میں انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تھا۔

پاکستان کی ٹیم: سلمان بٹ، عمران فرحت، عمر اکمل، زاہد علی، عمر امین، کامران اکمل، شعیب ملک، عمر گل، محمد عامر، دانش کنیریا اور محمد آصف۔

انگلینڈ کی ٹیم: اینڈریو سٹراس، ایلیسٹیئر کک، جانتھن ٹراٹ، کیون پیٹرسن، پال کالنگوڈ، ایون مارگن، میٹ پرایور، سٹورٹ براڈ، گریم سوان، جیمز اینڈرسن، سٹیون فِن اور ٹیم برسینن۔

اسی بارے میں