انگلینڈ دوسرا میچ بھی جیت گیا

شاہد آفریدی
Image caption کپتان شاہد آفریدی نے اس میچ میں پاکستان کی کارکردگی کو غیر ذمہ دارانہ قرار دیا

انگلینڈ نے کارڈف میں دوسرے ٹی ٹوئنٹی میچ میں پاکستان کو چھ وکٹوں سے شکست دے کر سیریز کے دونوں میچ جیت لیے ہیں۔

تبصرہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اس میچ میں پاکستانی ٹیم کی کارکردگی انتہائی ناقص رہی اور شائقین نے بھی میچ میں دلچسپی کا اظہار نہیں کیا۔

جب میچ ختم ہوا تو مورگن اٹھارہ جبکہ مائیکل یارڈی چھ رنز پر کھیل رہے تھے جبکہ میچ کی چھتیس گیندیں باقی تھیں۔انگلینڈ نے منگل کا میچ جیت کر مسلسل سات میچ جیتنے کا ریکارڈ بھی بنایا ہے۔

تفصیلی سکورکارڈ

اس میچ میں انگلینڈ کی طرف سے کولنگ ووڈ نے سب سے زیادہ اکیس سکور بنائے اور انھیں محمد حفیظ نے کیچ آؤٹ کیا۔ لیکن انگلینڈ کی طرف سے ٹم بریسینین نے شاندار بولنگ کی اور محمد یوسف اور اکمل کو آؤٹ کر کے پاکستان کی میچ میں واپسی کے امکانات ختم کر دیے۔ انھیں مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔

میچ کے بعد شاہد آفریدی نے پاکستان کے کھیل کو غیر ذمہ دارانہ قرار دیا جبکہ انگلینڈ کے کپتان کولنگ ووڈ کا کہنا تھا کہ ’آج کی فتح، خاص حثیت کی حامل ہے۔‘

اس میچ میں پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تھا اور انیسویں اوور میں نواسی رن پر پاکستان کی پوری ٹیم آؤٹ ہو گئی تھی۔

انگلینڈ کی طرف سےسوان، سائیڈباٹم اور براڈ نے دو دو اور بریسنن نے تین کھلاڑی آؤٹ کیے۔

پاکستان کی پہلی وکٹ دوسرے اوور میں گیارہ رن پر گری جب کامران اکمل آؤٹ ہو گئے۔ دوسرے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی محمد یوسف تھے جو تیسرے اوور میں آؤٹ ہوئے۔ پاکستان کی طرف سے

اس کے بعد جلد ہی شاہزیب حسن بھی آؤٹ ہو گئے۔ اس وقت ٹیم کا سکور بیس تھا۔ اس کے بعد دو رن کے اضافے پر شاہد آفریدی بھی آؤٹ ہو گئے۔ اس کے بعد چوالیس کے کل سکور پر عمر اکمل سترہ رن بنا کر آؤٹ ہو گئے۔ آؤٹ ہونے والے اگلے دو کھلاڑی فواد عالم اور محمد حفیظ تھے۔

پاکستان میں ٹیم میں شاہ زیب حسن، کامران اکمل، محمد حفیظ، فواد عالم، محمد یوسف، عمر اکمل، شاہد آفریدی، عبدل رزاق، عمر گل، سعید اجمل اور شعیب اختر شامل ہیں۔

اس سے پہلے کارڈف ہی میں اتوار کو کھیلے گئے پہلے ٹی ٹوئنٹی میچ میں انگلینڈ نے پانچ وکٹوں سے کامیابی حاصل کی تھی۔

اس میچ میں پاکستان نے پہلے کھیلتے ہوئے مقررہ بیس اوور میں چار وکٹ کے نقصان پر ایک سو چھبیس رنز بنائے تھے۔

اس طرح انگلینڈ کی ٹیم کو میچ جیتنے کے لیے ایک سو ستائیس رن کا ہدف ملا تھا جسے انگلینڈ نے پانچ کھلاڑیوں کے نقصان پر اٹھارویں اوور میں حاصل کر لیا تھا۔