فیڈرر ہار گئے، کلئسٹر کی فتح

Image caption نووک جاکووچ نے راجر فیڈرر کو ایک سنسنی خیز مقابلے کے بعد ہرا دیا

سربیائی کھلاڑی نواک جاکووچ یو ایس اوپن کے سیمی فائنل میں راجر فیڈرر کو ایک کانٹے دار مقابلے میں شکست دے کر فائنل میں رافیل ندال کے سامنے آ گئے ہیں۔

نواک جاکووچ نے دو میچ پوائنٹ بچا کر راجر فیڈر کو ہرا کر شائقین کو ششدر کر دیا۔ فیڈرر کی اس شکست سے ان کا یو ایس اوپن کے فائنل میں پہنچنے کا سلسلہ ٹوٹ گیا ہے۔ اس سے پہلے وہ چھ بار مسلسل یو ایس اوپن کے فائنل میں پہنچ چکے ہیں۔

تھرڈ سیڈ نواک جاکووچ نے ایک سنسنی خیز مقابلے کے بعد راجر فیڈرر کو پانچ سات، چھ ایک ، پانچ سات، چھ دو اور سات پانچ سے ہرا دیا۔

یہ دوسرا موقع ہے کہ جاکووچ یو ایس اوپن کے فائنل میں پہنچے ہیں۔ فائنل میں ان کا مقابلہ ہسپانو کھلاڑی رافیل ندال سے ہوگا۔ رافیل ندال نے اپنے روسی حریف میخائل یوزنی کو چھ دو، چھ تین اور چھ چار سے باآسانی ہرا دیا۔

Image caption دفاعی چیمپئن کم کلجسٹر نے تیسری بار یو ایس اوپن جیت لیا

اس سے پہلے بیلجیئم کی ِکم کلِئسٹرز نے تیسری مرتبہ یو ایس اوپن جیتنے کا اعزاز حاصل کر لیا۔ عالمی نمبر ون کم کلئسٹر نے اپنی روسی حریف ویرا زوناریوا کو سٹریٹ سیٹ میں چھ دو اور چھ ایک میں ہرا دیا۔ میچ ایک گھنٹے سے کم وقت میں ختم ہو گیا۔

ستائیس سالہ کلئسٹرز نے گزشتہ برس ریٹائرمنٹ سے واپس آ کر یو ایس ٹورنامنٹ جیت کر ٹینس کے کھیل کے شائقین کو حیران کر دیا تھا۔

راجر فیڈرر نے میچ کے بعد کہا کہ وہ اور زیادہ محنت کریں گے اور پھر سے گرینڈ سلیم مقابلوں کے فائنل میں پہنچنے کی کوشش کریں گے۔ وہ مسلسل تیسری بار کسی گرینڈ سلیم ٹورنامنٹ کے فائنل میں پہنچنے میں ناکام رہے ہیں۔

.

اسی بارے میں