کرکٹ ٹیم کے مینیجر مستعفی

یاور سعید
Image caption نو بال سکینڈل کے بعد یہ دورہ مینیجر یاور سعید کے لیے کافی مشکل رہا

انگلینڈ کے حالیہ دورے پر کرکٹ ٹیم کے مینیجر رہنے والے یاور سعید عہدے سے مستعفی ہو گئے ہیں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے ترجمان ندیم سرور نے اس کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ بورڈ کے چئرمین اعجاز بٹ نے پیر کے روز یاور سعید کے ساتھ ملاقات کے بعد ان کا استعفیٰ منظور کر لیا۔

پچھہتر سالہ یاور سعید نے کہا کہ وہ اپنے استعفے کے فیصلے پر کچھ نہیں کہنا چاہتے لیکن وہ ’کچھ عرصے سےاس کے بارے میں سوچ رہے تھے۔‘

تاہم پچھلے ہفتے بدھ کو ٹیم کے ساتھ لندن سے روانگی کے موقع پر یاور سعید نے استعفے کی افواہوں کو رد کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’میں نے استعفیٰ نہیں دیا ہے، میں استعفیٰ نہیں دے رہا ہوں اور میں کل استعفیٰ نہیں دینے والا ہوں۔‘

انگلینڈ کا دورہ کرکرٹ بورڈ اور ٹیم کے لیے مشکل اور متنازع رہا۔ آئی سی سی نے سٹے بازے سے مبینہ تعلق کے شبہ میں کپتان سلمان بٹ کے ساتھ محمد عامر اور محمد آصف کو معطل کر دیا، اور نیوز آف دا ورلڈ کی سپاٹ فکسنگ اور نو بال کے بارے میں انکشافات سے پاکستانی ٹیم انتہائی بندام ہوئی۔

یاور سعید ستر کی دہائی سے کرکٹ ٹیم کے کئی مرتبہ مینیجر رہے ہیں اور وہ اس انکوائری کمیٹی کے رکن بھی تھے جس نے آسٹریلیا کے دورے پر ٹیم کی خراب کارکردگی کی تفتیش کے بعد دیگر کھلاڑیوں کے کھیلنے پر پابندی لگا دی تھی۔

اسی بارے میں