نائجیریا کی ایتھلیٹ کا ڈرگ ٹیسٹ مثبت

اوسایمی آلودامولا
Image caption اوسایمی آلودامولا نے طلائی تمغہ جیتا تھا جو اب ان سے واپس لیا جاسکتا ہے

کامن ویلتھ کھیلوں ميں خواتین کی سو میٹر دوڑ میں طلائی تمغہ جیتنے والی نائجیریا کی اوسایمی آلودامولا کا ممنوعہ ادویات کا ٹیسٹ مثبت آیا ہے۔

کامن ویلتھ گیمز فیڈریشن کے صدر مائیک فینل نے کہا ہے کہ آلودامولا نے اب ’بی‘ نمونے یعنی دوسرے نمونے کے بھی ٹیسٹ کا مطالبہ کیا ہے اور اس بارے میں پیر کی شام شنوائی ہوگی۔

اوسایمی سو میٹر دوڑ ميں دوسری پوزیشن پر آئیں تھیں لیکن آسٹریلیا کی سیلی پیئرسن سے طلائی تمغہ واپس لیے جانے کے بعد انہیں چیمپئن قرار دیا گیا تھا۔

پئیرسن کو وقت سے پہلے دوڑ شروع کرنے کا قصوروار ٹھہرایاگیا تھا جس کے بعد ان کا طلائی تمغہ واپس لے لیا گیا تھا۔

دلی میں ہونے والے کامن ویلتھ کھیلوں میں ڈوپنگ ٹیسٹ کا یہ پہلا معاملہ ہے۔

آلودامولا کے نمونے میں ممنوعہ متھائیل ہیکسانمائن پایا گیا تھا جو واڈا کے تحت ممنوعہ ادویات ہیں۔

اگر آلودامولا کے دوسرے ٹیسٹ کی بھی تصدیق ہوجاتی ہے تو ان کا طلائی تمغہ سینٹ وینسیٹ اینڈ دا گریناڈنس کی نتاشا مائرز کو مل جائے گا۔ نتاشا اس مقابلے کی دوسرے نمبر کی فاتح تھی اور انہیں چاندی کا تمغہ ملا تھا۔ نتاشا کواگر طلائی تمغہ ملتا ہے تو ان کے ملک کو کامن ویلتھ کھیلوں میں ملنے والا یہ دوسرا طلائی تمغہ ہوگا۔

لیکن معاملے کی شنوائی تک تمغوں کے بارے میں کوئی فیصلہ نہیں کیا جائے گا۔

ٹیسٹ کے نتائج پوزيٹو آنے پر آلودامولا پر دو برس کی پابندی لگ سکتی ہے اور ان کا میڈل تو چھن ہی جائے گا۔