’تیاری کر کے مقدمہ لڑوں گا‘

محمد آصف
Image caption محمد آصف پر پیسے لے کر نو بال کرانے کا الزام ہے

دورہ انگلینڈ کے دوران سپاٹ فکسنگ میں مبینہ طور پر ملوث ہونے والے تین کھلاڑیوں میں سے ایک محمد آصف کا کہنا ہے کہ انہوں نے اپنی عارضی معطلی کے خلاف اپیل اس لیے واپس لی کہ وہ مکمل تیاری کر کے اس مقدمے کو لڑیں گے۔

ان تینوں کھلاڑیوں میں سے دو سلمان بٹ اور محمد عامر کی آنٹرنیشنل کونسل کی جانب سے عارضی معطلی کی سزا پر اپیل کی سماعت تیس اور اکتیس اکتوبر کو دبئی میں ہو رہی ہے۔

بی بی سی کی مناء رانا سے بات کرتے ہوئے محمد آصف کا کہنا تھاکہ ان کی وکیل نے انہیں بتایا کہ وقت کی کمی کے سبب وہ اس اپیل کی سماعت کے لیےمکمل تیاری نہیں کر سکیں جبکہ محمد آصف کہتے ہیں کہ وہ بھی یہی چاہتے ہیں کہ مکمل تیاری سے یہ کیس لڑا جائے اور یہ پابندی مکمل طور پر ختم ہو۔ یہ نہیں کہ میں یہ عارضی پابندی ختم کروا لوں۔انہوں نے کہا کہ ویسے بھی ابھی سکاٹ لینڈ یارڈ پولیس کی تحقیقات بھی ختم نہیں ہوئیں۔

انہوں نے کہا کہ میری وکیل کا بھی یہی مشورہ تھا کہ ہم مکمل سماعت کروائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ آئی سی سی کو بھی اس بات پر اعتراض نہیں کہ ہم اس کیس کو ختم کرنے کے لیے درخواست دیں۔

محمد آصف کا کہنا تھا کہ انہوں نے کوئی غلط کام نہیں کیا اور وہ سو فیصد پر امید ہے کہ وہ جلد انٹرنیشنل کرکٹ میں واپس لوٹیں گے۔

انہوں نے امیدظاہر کی کہ تین ماہ کے اندر آئی سی سی اس معاملے پر مکمل سماعت کر لے گی۔

آئی سی سی کی جانب سے عارضی معطلی کے سبب ان تینوں کھلاڑیوں کو متحدہ عرب امارات میں ہونے والی جنوبی افریقہ کے خلاف سیریز کے لیے پاکستان کی ٹیم میں شامل نہیں کیا گیا۔

محمد آصف پر ویسے بھی دبئی میں داخلے پر پابندی عائد ہے۔

اسی بارے میں