سری لنکا کی ٹیم فالو آن پر مجبور

کرس گیل
Image caption کرس گیل نے اپنی اننگز میں بتیس چوکے اور آٹھ چھکے لگائے تھے

ویسٹ انڈیز کے خلاف گالے میں کھیلے جانے والے پہلے ٹیسٹ کے چوتھے روز سری لنکا کی ٹیم فالو آن پر مجبور ہوئی ہے۔

پہلی اننگز میں جس وقت سری لنکا کے آخری کھلاڑی پی جے وردھنے آوٹ ہوئے اس وقت ٹیم کو فالو آن سے بچنے کے لیے صرف تین مزید رنز کی ضرورت تھی۔

میچ کے چوتھے روز جس وقت کھیل ختم ہوا اس وقت سری لنکا نے اپنی دوسری اننگز میں بغیر کسی نقصان کے نواسی رنز بنائے تھے۔ اننگز کی شکست سے بچنے کے لیے سری لنکا کو ابھی مزید ایک سو تیرہ رنز کی ضرورت ہے اور اس کی تمام وکٹیں باقی ہیں۔

اس وقت تلکا رتنے دلشان اور پراناویتانا بیٹنگ کر رہے ہیں اور دونوں کا سکور چوالیس رنز ہے۔

پہلی اننگز میں سری لنکا کی طرف سے سنگاکارا تہتر رنز بنا کر ٹاپ سکورر رہے۔ مہیلا جے وردھنے نے انسٹھ، سمرا ویرا نے باون، پی جے وردھنے نے اٹھاون اور پرساد نے سینتالیس رنز بنا کر ٹیم کو فالو آن سے بچانے کی بہت کوشش کی لیکن وہ اپنے مقصد میں کامیاب نہ ہو سکے۔

ویسٹ انڈیز کی طرف سے شلنگفورڈ نے چار کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا جبکہ روچ نے تین وکٹیں لیں۔

ویسٹ انڈیز نے اپنی پہلی اننگز میں کرس گیل کے شاندار تین سو تینتیس رنز کی بدولت پانچ سو اسی رنز بنائے تھے۔

اس ٹرپل سنچری کے ساتھ کرس گیل کرکٹ کی تاریخ میں چوتھے ایسے کھلاڑی بن گئے ہیں جنہوں نے ٹیسٹ کرکٹ میں دو مرتبہ ٹرپل سنچری بنائی ہے۔

ٹیسٹ کے دوسرے دن گیل نے سب سے پہلے اسی سٹیڈیم میں بنا ہوا مہیلا جے وردھنے کا دو سو سینتیس رنز کا ریکارڈ توڑا۔ لنچ کے بعد انھوں نے کولکتہ میں بنا ہوا روہن کینہائی کا اڑتالیس برس پرانا دو سو چھپن رنز کا ریکار توڑا اور برِ صغیر میں ویسٹ انڈیز کے کسی بھی کھلاڑی کی جانب سے سب سے زیادہ رنز بنانے کا ریکارڈ قائم کر دیا۔

اس کے بعد انہوں نے اپنا انفرادی سکور مزید بڑھایا اور کرکٹ کی تاریخ میں ڈان بریڈ مین، برائن لارا اور وریندر سہواگ کے بعد دو ٹرپل سنچریاں بنانے والے چوتھے کھلاڑی بن گئے۔

کرس گیل نے اس سے پہلے جنوبی افریقہ کے خلاف ٹرپل سنچری بنائی تھی جس میں ان کا انفرادی سکور تین سو سترہ رنز تھا۔

اس ٹیسٹ میچ میں ویسٹ انڈیز نے ٹاس جیت کر پہلے کھیلنے کا فیصلہ کیا تھا۔

اسی بارے میں