’آئی پی ایل سے خارج کرنے کےفیصلہ چیلنج‘

Image caption پریتی زنٹا صنعت کار نیس واڈیا کے ساتھ ہائی کورٹ میں

بالی وڈ اداکارہ پریتی زنٹا اور صنعت کار نیس واڈیا نے اپنی فرنیچائز کنگس الیون پنجاب کو آئی پی ایل سے خارج کرنے کے بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ ان انڈیا ( بی سی سی آئی ) کے فیصلے کو ہائی کورٹ میں چیلنج کر دیا ہے۔

عدالت نے اپیل پر سماعت جمعہ تک کے لیے ملتوی کر دی۔

خیال کیا جا رہا ہے کہ عدالت میں سماعت کی وجہ سے آئی پی ایل کی ٹیموں کے لیے کھلاڑیوں کی نیلامی جو آئندہ برس آٹھ اور نو جنوری کو ہونے والی تھی، اس کی تاریخوں کو آگے بڑھایا جا سکتا ہے۔

بی سی سی آئی نے دس اکتوبر کو آئی پی ایل کی دو ٹیموں راجستھان رائلز اور کنگس الیون پنجاب کو معاہدے کی مبینہ خلاف ورزی کےالزام میں آئی پی ایل سے خارج کر دیا تھا۔ شلپا شیٹی اور راج کندر کی ٹیم راجستھان رائلز نے بھی عدالت سے رجوع کیا تھا۔

عدالت نے انہیں بی سی سی آئی سے افہام و تفہیم کے ذریعے اس مسئلے کا حل تلاش کرنے کا کہنا تھا۔

بعد میں سابق جسٹس سری کرشنا نے اس معاملے کی تفتیش کے بعد راجستھان رائلز کی برخاستگی پر چھ ہفتے تک کے لیے حکم امتناعی جاری کر دیا تھا۔

جسٹس کرشنا نے ساتھ ہی یہ بھی کہا کہ دونوں فریقین آپسی گفت و شنید کے بعد حتمی فیصلہ کریں۔ لیکن کنگس الیون پنجاب کو عدالت سے دوبارہ رجوع ہونے کے لیے کہا تھا۔

جسٹس سری کرشنا کے فیصلے سے خوش راجستھان رائلز کو یہ توقع ہے کہ اب وہ جنوری میں ہونے والی نیلامی میں بھی حصہ لے سکتی ہے۔

لیکن جسٹس سری کرشنا نے کنگس الیون پنجاب کے بارے میں فیصلہ نہیں دیا اس لیے کنگس الیون نے عدالت سے رجوع کیا۔

دوسری جانب بی سی سی آئی ذرائع کا کہنا ہے کہ وہ راجستھان رائلز کے حوالے سے دیے گئے فیصلے کے خلاف بھی عدالت جائیں گے۔

آئی پی ایل سیزن فور میں آٹھ ٹیمیں ہوں گی یہ ٹیمیں کھلاڑیوں کی نیلامی میں بولی لگا کر اپنے کھلاڑیوں کا انتخاب کریں گی۔ آئی پی ایل ٹیموں کے درمیان میچ ورلڈ کپ میچ ختم ہونے کے چھ دن بعد شروع ہونا طے تھا لیکن عدالتی کاررائیوں کی وجہ سے شاید کچھ تبدیلیاں ہوں۔