ایڈیلیڈ ٹیسٹ:انگلینڈ کی برتری بہتر رنز

یہ اس سیریز میں کک کی دوسری سنچری ہے

ایڈیلیڈ ٹیسٹ میچ کے دوسرے دن کے اختتام پر انگلینڈ نے آسٹریلیا کے دو سو پینتالیس رنز کے جواب میں اپنی پہلی اننگز میں دو وکٹ کے نقصان پر تین سو سترہ رنز بنائے ہیں۔

انگلینڈ کو آسڑیلیا پر بہتر رنز کی سبقت حاصل ہے اور پہلی اننگز میں اُس کی آٹھ وکٹیں باقی ہیں۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

اس وقت کریز پر ایلسٹر کک اور کیون پیٹرسن موجود ہیں اور دونوں نے بالترتیب ایک سو چھتیس اور پچاسی رنز بنائے ہیں۔

دوسرے دن جب کھیل شروع ہوا تو انگلینڈ کی جانب سے ایلسٹر کک اور اینڈریو سٹراس نے اننگز کا آغاز کیا تاہم صرف تین کے مجموعی سکور پر سٹراس ایک رن بنا کر آؤٹ ہو گئے۔ تاہم اس کے بعد ایلسڑ کک اور جوناتھن ٹراٹ نے دوسری وکٹ کے لیے ایک سو تہتر رنز کی عمدہ پارٹنر شپ قائم کی۔

انگلینڈ کی دوسری وکٹ ایک سو چھہتر رنز کے مجموعی سکور پر اس وقت گری جب ٹراٹ آؤٹ ہوئے۔ انہوں نے گیارہ چوکوں کی مدد سے اٹھہتر رنز بنائے۔ ٹراٹ کے جگہ کیون پیٹرسن کھیلنے آئے اور انہوں نے کک کے ساتھ مل کر عمدہ بلے بازی کا سلسلہ جاری رکھا اور آسٹریلوی بولروں کو مزید کوئی وکٹ حاصل نہ کرنے دی۔

ایلسٹر کک نے اس دوران ایک سو چوراسی گیندوں پر پندرہ چوکوں کی مدد سے سنچری مکمل کی۔ وہ اس سیریز میں اب تک اس سنچری کے علاوہ ایک ڈبل سنچری اور ایک نصف سنچری بھی بنا چکے ہیں۔

آسٹریلیا کی جانب سے ہیرس اور بولنجر نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

ایڈیلیڈ اوول میں کھیلے جا رہے اس میچ میں آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا تھا لیکن انگلش بولروں کی تباہ کن بولنگ کی بدولت آسٹریلوی ٹیم ایک بڑا سکور کرنے میں ناکام رہی تھی۔

آسٹریلیا کی ٹیم: سائمن کیٹچ، شین واٹسن، رکی پونٹنگ، مائیکل کلارک، مائیکل ہسی، مارکس نارتھ، پیٹر سِڈل، دوہٹری، بریڈ ہیڈن، ہیرس اور ڈگ بولنجر

انگلینڈ کی ٹیم: اینڈریو سٹراس، ایلسٹر کک، جوناتھن ٹروٹ، کیون پیٹرسن، پال کولنگ وڈ، ایئن بیل، میتھیو پرائر، سٹورٹ براڈ، گریم سوان، جیمز اینڈرسن اور سٹیو فنِ۔

اسی بارے میں