تاویز مانچسٹرسٹی چھوڑنے کے لیے پرعزم

Image caption کارلوس تاویز نے مانچسٹر سٹی کی جانب سے دو سیزن میں تینتیس گول کیے ہیں

ارجنٹنائن سے تعلق رکھنے والے فٹبالر کارلوس تاویز کا کہنا ہے کہ وہ انگلش فٹبال کلب مانچسٹر سٹی سے اپنا معاہدہ ختم کرنے کے سلسلے میں سنجیدہ ہیں کیونکہ کلب کے ’چند افسران‘ کے ساتھ ان کے تعلقات اتنے کشیدہ ہوگئے ہیں کہ ان میں بہتری کی کوئی امید نہیں۔

مانچسٹر سٹی نے چھبیس سالہ تاویز کی جانب سے ان کی خدمات فروخت کر دیے جانے کی درخواست رد کر دی ہے۔ انہوں نے اس درخواست میں کلب چھوڑنے کی وجہ ذاتی معاملات کو قرار دیا تھا۔

کارلوس تاویز نے کہا ہے کہ یہ اطلاعات درست نہیں کہ کلب کے مینیجر سے ان کے تعلقات اچھے نہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ کلب چھوڑنے کا معاملہ’وہ ہے جس کے بارے میں میں کافی عرصے سے سوچ رہا تھا‘۔

اتوار کو اپنے ایک بیان میں تاویز نے کہا کہ انہوں نے اس موسمِ گرما میں کلب کو الوداع کہنے کا فیصلہ کیا تھا۔

مانچسٹر سٹی کی انتظامیہ نے تاویز کے مشیر اور ایرانی کاروباری شخصیت کیا جوربچین کو تاویز کے اس فیصلے کی وجہ قرار دیا ہے تاہم تاویز کے مطابق ’میں ان باتوں کی تردید کرتا ہوں کہ مجھ پر کسی کا دباؤ ہے‘۔

ان کا کہنا ہے کہ ’میں اسی موسمِ گرما میں چلے جانا چاہتا تھا لیکن مجھے واپس آنے کے لیے منایا گیا۔ افسوس ہے کہ میرے خیالات تبدیل نہیں ہو سکے ہیں‘۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ’کچھ حکام اور افراد کے ساتھ میرے تعلقات بہت بگڑ چکے ہیں اور میں اس موقع پر اس سے زیادہ اور کچھ نہیں کہنا چاہتا۔ وہ جانتے ہیں کیونکہ میں انہیں بتا چکا ہوں‘۔

اسی بارے میں