عمران جنوبی افریقہ کی نمائندگی کے اہل

عمران طاہر
Image caption عمران طاہر نے شادی کے بعد جنوبی افریقہ میں رہائش اختیار کر لی تھی

پاکستانی نژاد کرکٹر عمران طاہر جنوبی افریقہ کی شہریت ملنے کے بعد جنوبی افریقی کرکٹ ٹیم میں شمولیت کے اہل بن گئے ہیں۔

لاہور میں پیدا ہونے والے لیگ بریک بالر عمران طاہر نے نوے کی دہائی میں پاکستان میں جونیئر لیول سے اپنے کرکٹ کیرئر کا آغاز کیا تھا۔

انہوں نے پاکستان انڈر نائٹین اور پاکستان اے کی جانب سے بھی ملک کی نمائندگی کی تاہم وہ پاکستان کی قومی کرکٹ ٹیم میں جگہ نہیں بنا سکے تھے۔

بعدازاں انہوں نے ایک جنوبی افریقی خاتون سے شادی کرنے کے بعد جنوبی افریقہ میں رہائش اختیار کر لی تھی۔

کرکٹ ساؤتھ افریقہ کے چیف ایگزیکٹو جیرالڈ مجولا کا کہنا ہے کہ اب جبکہ عمران طاہر کو جنوبی افریقہ کی شہریت مل گئی ہے تو وہ یقینی طور پر قومی ٹیم میں سلیکشن کے امیدوار ہیں۔

وہ آئی سی سی کے قوانین کے تحت بھی جنوبی افریقہ کی نمائندگی کے اہل ہیں۔ بین الاقوامی کرکٹ کونسل کے قانون کے تحت کوئی کھلاڑی کسی نئے ملک کی نمائندگی کا اسی صورت میں اہل ہو سکتا ہے اگر اس نے اپنے آبائی ملک کے لیے کسی لیول پر بھی چار برس سے زیادہ کرکٹ نہ کھیلی ہو۔

عمران نے جنوبی افریقہ میں قیام کے دوران پہلے ٹائنٹرز اور پھر ڈولفنز ٹیم کی جانب سے مقامی کرکٹ سیزن میں باقاعدگی سے حصہ لیا اور حالیہ سیزن کے دوران وہ جنوبی افریقی ڈومیسٹک سیزن میں سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کرنے والے بالر تھے۔

اسی بارے میں