’دو ہزار پندرہ کا عالمی کپ اصل ہدف‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ابھی بہت کچھ کرنا باقی ہے، اینڈی فلاور

انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے کوچ اینڈی فلاور نے کہا ہے کہ ٹیسٹ کرکٹ کی درجہ بندی میں پہلے نمبر پر آنے کے بعد ان کی نظریں دو ہزار پندرہ کے عالمی کپ پر ہیں۔

انگلینڈ نے بھارت کو ایجبسٹن میں کھیلے گئے تیسرے ٹیسٹ میچ میں ایک اننگز اور دو سو بیالیس رنز سے شکست دے کر چار میچوں کی سریز میں تین صفر کی فیصلہ کن برتری حاصل کر لی ہے۔

تاہم اینڈی فلاور کااصرار ہے کہ ان کی ٹیم ٹیسٹ کرکٹ میں پہلی پوزیشن حاصل کرنے کے بعد اس کی حیثیت برقرار رکھنے تک ہی محدود نہیں رہے گی بلکہ ابھی بہت کچھ کرنا باقی ہے۔

انہوں نے کہا ’انگلینڈ آج تک پچاس اوورز پر مشتمل کرکٹ کا عالمی کپ جیتنے میں ناکام رہا ہے تاہم سنہ دو ہزار پندرہ کے عالمی کپ کے لیے منصوبہ بندی شروع کر دی گئی ہے۔‘

واضح رہے کہ سنہ دو ہزار نو میں اینڈی فلاور کی جانب سے انگلش ٹیم کے کل وقتی ڈائریکٹر بننے کے بعد انگلینڈ کی ٹیم گزشتہ نو ٹیسٹ سیریز میں ناقابلِ شکست رہی ہے۔

اس دوران کھیلی گئی ان نو ٹیسٹ سیریز میں سے آٹھ میں انگلینڈ نے کامیابی حاصل کی ہے جبکہ جنوبی افریقہ کے خلاف کھیلی جانے والی سیریز ایک ایک سے برابر رہی تھی۔

اگرچہ انگلینڈ گزشتہ سال ٹی ٹوئنٹی کرکٹ کا عالمی کپ جیتنے میں کامیاب رہا تاہم ایک روزہ میچوں میں اس کی کارکردگی میں تسلسل کی کمی ہے۔ ایک روزہ میچوں کی موجودہ درجہ بندی میں انگلینڈ کی ٹیم پانچویں نمبر پر ہے۔

انگلینڈ کی ٹیسٹ ٹیم کے موجودہ کپتان اینڈریو سٹراس نے سنہ دو ہزار گیارہ کے کرکٹ کے عالمی کپ کے کوارٹر فائنل میں سری لنکا کے ہاتھوں دس وکٹوں کی شکست کے بعد ایک روزہ میچوں سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کر دیا تھا۔

اینڈریو سٹراس کی ریٹائرمنٹ کے بعد ایلسٹر کک کو انگلینڈ کا ایک روزہ میچوں کا کپتان مقرر کیا گیا ہے۔

سنہ دو ہزار پندرہ کا کرکٹ کا عالمی کپ آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ میں مشترکہ طور پر کھیلا جائے گا۔

دریں اثناء انگلش بالر جیمز اینڈرسن نے بی بی سی ریڈیو فائیو کو بتایا کہ ہر قوم ہر کھیل میں پہلی پوزیشن حاصل کرنا چاہتی ہے لیکن ایسا شاذ ونادر ہی ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا ’ہم نے فتح حاصل کر لی ہے اور ہم ٹیسٹ کرکٹ کی دنیا میں پہلے نمبر پر ہیں۔‘

اسی بارے میں