انگلینڈ اور بھارت کا میچ برابر

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

لندن میں لارڈز کے کرکٹ میدان پر بھارت اور انگلینڈ کے درمیان بارش سے بار بار متاثر ہونے والا چوتھا ایک روزہ میچ زبردست مقابلے کے بعد ڈک ورتھ لیوئس کی بنیاد پر برابر قرار پایا۔

انگلینڈ نے پانچ میچوں کی یہ سیریز جیت لی ہے جبکہ ابھی ایک میچ ہونا باقی ہے۔

انگلینڈ نے اس میچ میں ٹاس جیت کر بھارت کو کھلانے کا فیصلہ کیا تھا۔ بھارت نے سریش رائنا کے چوراسی اور کپتان دھونی کے اٹھہتر رن کی بدولت دو سو اسی رن بنائے اور یوں میچ جیتنے کے لیے انگلینڈ کو دو سو اکاسی کا ہدف دیا۔

لارڈز کے میدان کو اس وقت بارش نے آ لیا جب میچ کی آخری سات گیندیں باقی تھیں اور انگلینڈ کو میچ جیتنے کے گیارہ رن درکار تھے اور اس کے دو کھلاڑی باقی تھے۔

انگلینڈ کی اننگز اس سے قبل دو مرتبہ بارش کی وجہ سے روکنی پڑی تھی۔

انگلینڈ کی طرف سے روی بھوپارا نے زبردست انگز کھیلی اور وہ چھیانوے رن بنا کر جادیجا کی گیند پر مناف پٹیل کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے۔ بھوپارا کے علاوہ ائین بیل نے بھی نصف سنچری بنائی۔

انگلینڈ کی اننگز کا آغاز اچھا نہیں تھا اور ابتدا ہی میں ان کو دو نقصان اٹھانے پڑے۔ پہلی وکٹ اکیس کے سکور پر گری جبکہ انگلینڈ کو دوسرا نقصان ستائیس کے سکور پر ہوا۔

اس کے بعد اکسٹھ کے سکور پر ٹراوٹ آؤٹ ہو گئے۔ لیکن روی بھوپارا اور ائین بیل نے انگلینڈ کی اننگز کو سنبھالا دیا۔ انگلینڈ کی اننگز کے آخری حصہ میں بریزنن اور سوان نے بھی اچھی اننگز کھیلیں۔ انھوں نے بالترتیب بائئس گیندوں پر ستائیس اور اکتیس گیندوں پر تیئس رن بنائے۔

بھارت نے دو سو اسی رن صرف پانچ ووکٹوں کے نقصان پر بنائے۔ بھارت کی طرف سے اس کے اوپنرز نے بھی اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ بھارت کی ٹیم میں نوجوان کھلاڑیوں کے شامل ہونے سے گزشتہ دونوں میچوں میں زبردست مقابلہ دیکھنے میں آیا ہے۔

اسی بارے میں