پیٹر روبک نے خودکشی کرلی

پیٹر روبک
Image caption پیٹر روبک پچپن برس کے تھے

کرکٹ کے سابق کھلاڑی، مبصر اور کھیلوں کے امور کے ماہر پیٹر روبک جنوبی افریقہ کے ہوٹل میں مردہ پائے گئے ہیں۔ پولیس کا کہنا ہے کہ انہوں نے خودکشی کی ہے۔ ان کی عمر پچپن برس تھی۔

پیٹر روبک اسی کی دہائی میں انگلش کاؤنٹی سمرسیٹ کے کپتان رہ چکے ہیں اور وہ دنیا میں کرکٹ کے معروف ماہرین میں سے ایک تھے۔

کرکٹ سے 1991 میں سبکدوش ہونے کے بعد پیٹر روبک آسٹریلیا چلے گئے تھے جہاں انہوں نے کئی بڑے اخبارات میں کرکٹ کے بارے میں ایک کھیل کے ماہر کے طور پر لکھنا شروع کیا۔ اس کے لیے انہیں بے حد مقبولیت بھی حاصل ہوئی ہے۔

وہ آسٹریلیائی براڈکاسٹنگ کارپوریشن کے لیے کمنٹری بھی کرتے تھے۔

جنوبی افریقہ کی پولیس کی جانب جاری کیے گئے ایک بیان میں اس بات کی تصدیق کی گئی ہے کہ پیٹر روبک نے خودکشی کی ہے۔ ’ہم اس بات کی تصدیق کرتے ہیں کہ خودکشی کا یہ واقعہ کلیرلمنٹ ہوٹل میں گزشتہ رات نو بج کر اکیس منٹ پر پیش آیا ہے۔‘

پیٹر روبک جنوبی افریقہ میں جاری ٹیسٹ سیریز کے سلسلے میں وہاں پہنچے ہوئے تھے۔

ہوٹل کی جانب سے جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ وہ اس واقعہ کی تفتیش کر رہے ہیں۔ ہوٹل کی جانب سے اس واقعہ کی کوئی اور تفصیلات نہیں دی گئی ہیں۔

پیٹر روبک کو 1988 میں وزڈن کرکٹر آف دی ایئر بھی منتخب کیا گیا تھا۔

اسی بارے میں