سیریز کا فیصلہ سپنروں کےہاتھ میں:گوچ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سعید اجمل نےگزشتہ ٹیسٹ سیریز میں انگلش بیٹسمینوں بے حد پریشان کیا تھا

انگلش بیٹنگ کوچ گراہم گوچ نے کہا ہے کہ وہ پاکستانی سپنر سعید اجمل کی ممکنہ ڈلیوری ’تیسرا‘ سے پریشان نہیں ہیں لیکن پاکستان کے ساتھ ٹیسٹ سیریز کا فیصلہ سپنروں کو کھیلنے کی صلاحیت پر ہو گا۔

دبئی میں پی سی بی الیون کے خلاف میچ کے دوران انگلش بیٹسمین پاکستانی سپنروں کے سامنے مشکلات کا شکار رہے ہیں اور نوجوان پاکستانی لیگ سپنر یاسر شاہ نے انگلینڈ کے پانچ کھلاڑی آؤٹ کیے۔ انگلش اوپنر ایلسٹر کک کے علاوہ کوئی دوسرا بیٹسمین سپنروں کو اعتماد کے ساتھ نہیں کھیل سکا۔

جوناتھن ٹراٹ اور این بیل کوئی رنز سکور نہ کرسکے جبکہ کیون پیٹرسن نے اڑتیس رنز بنائے۔این مورگن صرف گیارہ سکور کر سکے اور وہ متحدہ عرب امارت میں کھیلی جانے والی تین اننگز میں صرف پندرہ رنز بنا سکے ہیں۔

گراہم گوچ نے کہا کہ سعید اجمل کی نئی ڈلیوری کے حوالے سے زیادہ پریشان نہیں ہیں۔ ’بولر کیا کہتے ہیں وہ زیادہ اہم نہیں ہے۔ اہم بات یہ ہے کہ وہ کیسی بولنگ کرتے ہیں۔‘

سعید اجمل نے سیریز سے پہلے کہا تھا کہ وہ انگلینڈ کے خلاف ایک نئی ڈلیوری متعارف کروائیں گے۔ ماہرین سعید اجمل اپنی نئی ڈلیوری کو ’تیسرا‘ کہہ رہے ہیں۔ تیسرا دراصل ٹاپ سپن گیند ہوتی ہے جس کی اچھال دوسری گیندوں سے قدرے زیادہ ہوتی ہے۔

گراہم گوچ نے کہا کہ سب جانتے ہیں کہ سعید اجمل دو ہزار گیارہ میں سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کرنے والے بولر ہیں اور وہ انگلش بیٹسمینوں کے لیے ایک بڑا چیلنج ہیں۔

گراہم گوچ نے کہا کہ سعید اجمل کی نئی ڈلیوری کے بارے میں دیکھنا پڑے گا کہ وہ کیا ہے۔’ یاد رکھیں آپ بولر کو یہ سوچ کر نہیں کھیلتے کہ وہ کیا کہہ رہا ہے بلکہ اس کی بولنگ دیکھ کر کھیلتے ہیں۔