’پاکستانی ٹیم کی صلاحیت سے انکار نہیں‘

فائل فوٹو تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم کے کپتان اینڈریو سٹراس نے یہ تسلیم کیا ہے کہ پاکستانی ٹیم کو نظرانداز نہیں کیا جاسکتا اور باصلاحیت کرکٹرز کی یہ ٹیم متحدہ عرب امارات کے موسمی حالات اور وکٹوں پر ان کے لیے زبردست چیلنج بن سکتی ہے۔

اینڈریو سٹراس کا کہنا ہے کہ پچھلے بارہ مہینوں میں پاکستانی ٹیم نے کارکردگی میں مستقل مزاجی دکھائی ہے اور اچھے نتائج دیے ہیں۔

واضح رہے کہ انگلینڈ کی ٹیم چھ ماہ بعد ٹیسٹ کرکٹ کھیل رہی ہے اور سٹراس بہت پرجوش ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ تیاری اچھی ہے اور پہلے ٹیسٹ سے قبل دو وارم اپ میچز بہت ہی اچھی سہولتوں کے ساتھ کھیلے گئے اور اب اصل امتحان کا وقت ہے۔

سٹراس کا کہنا ہے کہ یہ دونوں ٹیموں کی ذمہ داری ہے کہ وہ سپاٹ فکسنگ سکینڈل کو بھول کر صحیح سمت میں کرکٹ کھیلنے کے بارے میں سوچیں۔

تاہم پاکستانی کپتان مصباح الحق کہتے ہیں کہ سپاٹ فکسنگ سکینڈل کے بعد ٹیم نے گزشتہ سال جس اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے اس سے ثابت ہوتا ہے کہ وہ کرکٹ پر ہی اپنی توجہ مرکوز رکھے ہوئے ہے۔ ان کی قیادت میں پاکستان نےگزشتہ سال دس میں سے چھ ٹیسٹ میچز میں فتح حاصل کی ہے اور صرف ایک میچ ہارا ہے۔

مصباح الحق سمجھتے ہیں کہ انگلینڈ کی ٹیم اچھی کارکردگی کے لیے زیادہ محنت کرے گی کیونکہ اسے یہ ثابت کرنا ہے کہ وہ ایشیا میں بھی اچھے نتائج دے سکتی ہے۔ دوسری جانب پاکستانی ٹیم بھی ایک بڑی ٹیم کا سامنا کر رہی ہے اور ان کے خیال میں یہ ایک اچھا مقابلہ ہوگا۔

مصباح الحق کو اپنی ٹیم پر مکمل بھروسہ ہے لیکن ان کا اپنے کھلاڑیوں کے لیے یہی مشورہ ہے کہ انہیں بڑی ٹیم کے سامنے اپنی پوری صلاحیت کے ساتھ کھیلنا ہوگا کیونکہ بڑی ٹیمیں حریفوں کو سنبھلنے کا موقع نہیں دیتی ہیں۔

اسی بارے میں