’کرکٹرز کا کام کھیلنا ہے فیصلہ کرنا نہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اس وقت انگلینڈ ٹیم میں سب یہی سوچ رہے ہیں کہ اگلے میچز جیتے جائیں: ٹراٹ

انگلینڈ کے بیٹسمین جوناتھن ٹراٹ نے کہا ہے کہ کسی بھی بولر کے بولنگ ایکشن کے بارے میں فیصلہ کرنا آئی سی سی کا کام ہے اور کرکٹرز کا کام کھیلنا ہے۔

پاکستان کے خلاف دبئی ٹیسٹ میں شکست کے بعد سے برطانوی ذرائع ابلاغ سعید اجمل کے بولنگ ایکشن ہی کو موضوع بحث بنائے ہوئے ہیں۔

سعید اجمل نے میچ میں دس وکٹیں حاصل کرکے پاکستان کو تین دن میں ہی کامیابی سے ہمکنار کرنے میں کلیدی کردار ادا کیا تھا۔

جمعہ کے روز انگلینڈ کے کوچ اینڈی فلاور نے کہا تھا کہ وہ سعید اجمل کے بولنگ ایکشن کے بارے میں اپنی ذاتی رائے رکھتے ہیں لیکن اس کا اظہار کرنا موجودہ صورتحال میں بہترنہیں ہوگا۔

سنیچر کو انگلش بیٹسمین جوناتھن ٹراٹ نے ٹیم پریکٹس کے بعد صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سعید اجمل نے دبئی ٹیسٹ میں بہت عمدہ بولنگ کی۔

ان کا کہنا تھا کہ وہ سعید اجمل کے خلاف پہلے بھی کھیلتے رہے ہیں اور کامیاب رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ’جہاں تک ان کے بولنگ ایکشن پر اعتراض کی بات ہے، یہ کام کرکٹرز کا نہیں بلکہ آئی سی سی کا ہے کہ وہ اس بارے میں نظر رکھے‘۔

جوناتھن ٹراٹ نے کہا کہ یہ مناسب معلوم نہیں ہوتا کہ حریف ٹیم کے بارے میں بات کی جائے، انہیں اپنی ٹیم کے بارے میں سوچنا ہے اور اس وقت انگلینڈ ٹیم میں سب یہی سوچ رہے ہیں کہ اگلے میچز جیتے جائیں۔

ادھر پاکستانی ٹیم کے کوچ محسن خان نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ سعید اجمل کے بولنگ ایکشن کے بارے میں ہونے والی بحث پر دھیان ہی نہیں دے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جب یہ بحث شروع ہوئی تھی اسی وقت ٹیم کی میٹنگ میں فیصلہ کر لیا گیا تھا کہ اس موضوع پر کوئی بات نہیں کی جائے۔

انہوں نے کہا کہ ہر کھلاڑی کی توجہ میدان میں کرکٹ پر ہے اور باہر کیا باتیں ہورہی ہیں اس بارے میں کوئی پریشانی لاحق نہیں۔

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان دوسرا ٹیسٹ میچ پچیس جنوری سے ابوظہبی میں کھیلا جائے گا۔

اسی بارے میں