آسٹریلیا کا ’وائٹ واش‘ مکمل

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption آسٹریلیا نے سیریز کے دو میچ اننگز کے فرق سے جیتے

آسٹریلیا نے بھارت کو چار میچوں کی ٹیسٹ سیریز کے آخری میچ میں بھی دو سو اٹھانوے رن سے ہرا کر سیریز چار صفر سے جیت لی ہے۔

اس میچ میں آسٹریلیا نے بھارت کو فتح کے لیے پانچ سو رن کا ہدف فراہم کیا تھا لیکن بھارت کی پوری ٹیم پانچویں دن دو سو ایک رن بنا کر آؤٹ ہوگئی۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

ایڈیلیڈ ٹیسٹ کے پانچویں دن جب کھیل شروع ہوا تو آسٹریلیا کو فتح کے لیے چار وکٹیں درکار تھیں۔

بھارت کی ساتویں وکٹ گزشتہ روز کے سکور میں بغیر کسی اضافے کے اس وقت گری جب تیسرے ہی اوور میں ریان ہیرس نے ایشانت شرما کو وکٹوں کے پیچھے کیچ کروا دیا۔

مجموعی سکور میں چار رن کے اضافے کے بعد ساہا بھی پویلین لوٹ گئے، انہیں پیٹر سڈل نے آؤٹ کیا۔

ظہیر خان نے ہلفنہاس کی گیند پر ڈیوڈ وارنر کو کیچ تھمانے سے قبل چند دلکش سٹروک کھیلے لیکن ان کی یہ اننگز بھارت کے کسی کام نہ آ سکی۔ یہ ہلفنہاس کی اس سیریز میں ستائیسویں وکٹ تھی۔

آؤٹ ہونے والے آخری بھارتی بلے باز امیش یادو تھے جنہیں نیتھن لیون نے کیچ کروایا۔

پیٹر سڈل کو اس میچ میں چھ وکٹیں لینے پر بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔ انہوں نے اس سیریز میں مجموعی طور پر تیئیس وکٹیں حاصل کیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ویرات کوہلی اس سیریز میں بھارت کے ٹاپ سکورر رہے

ایڈیلیڈ ٹیسٹ میں آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا تھا اور پہلی اننگز میں مائیکل کلارک اور رکی پونٹنگ کی ڈبل سنچریوں کی بدولت سات وکٹوں کے نقصان پر چھ سو چار رن بنائے تھے۔

اس کے جواب میں بھارت کی پوری ٹیم پہلی اننگز میں دو سو بہتّر رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی تھی۔ بھارت کی جانب سے ویرات کوہلی نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کرتے ہوئے ایک سو سولہ رنز بنائے تھے۔

دوسری اننگز میں آسٹریلیا نے اپنی اننگز پانچ وکٹوں کے نقصان پر ایک سو سڑسٹھ رنز بنا کر ڈیکلیئر کر دی تھی اور بھارت کو جیتنےکے لیے پانچ سو ایک رنز کا ہدف دیا تھا۔

چار میچوں کی سیریز کا پہلا ٹیسٹ آسٹریلیا نے ایک سو بائیس رن، دوسرا میچ ایک اننگز اور اڑسٹھ رنز جبکہ تیسرا ایک اننگز اور سینتیس رنز سے جیتا۔

یہ انیس سو سڑسٹھ۔ارسٹھ کے بعد پہلا موقع ہے کہ بھارت کو آسٹریلیا میں کسی ٹیسٹ سیریز میں ’وائٹ واش‘ کی ہزیمت اٹھانا پڑی ہے۔

اسی بارے میں