انگلینڈ کی فٹبال ٹیم کے مینیجر مستعفی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption میرے خیال میں جان ٹیری کا کپتان اپنے منصب پر برقرار رہنا درست تھا: فیبیو کپیلو

انگلینڈ کی فٹبال کی ٹیم کے مینیجر فیبیو کپیلو نے استعفیٰ دے دیا ہے۔ اس بات کی تصدیق فٹبال ایسوسی ایشن نے کردی ہے۔

فیبیو کپیلو نے اپنا استعفٰی فٹبال ایسوسی ایشن کے چیئرمین ڈیوڈ برنسٹین اور جنرل سیکریٹری ایلیکس ہارن کے ساتھ ویمبلے میں ملاقات کے بعد دیا۔

فٹبال ایسوسی ایشن کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے ’فٹبال ایسوسی ایشن تصدیق کرسکتی ہے کہ فیبیو کپیلو نے آج انگلینڈ کے مینیجر کی حیثیت سے استعفٰی دے دیا ہے۔‘

پیر کو اطالوی براڈکاسٹ نے جان ٹیری کو ٹیم کے کپتان کی حیثیت سے فارغ کرنے کے فٹ بال ایسوسی ایشن کے فیصلے کو چیلنج کیا تھا۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے ’ملاقات میں فٹبال ایسوسی ایشن کے فیصلے پر بحث کی گئی تھی جس کے مطابق انگلینڈ کی ٹیم کے کپتان جان ٹیری کو ان کے منصب سے ہٹایا گیا تھا اور اس فیصلے پر فیبیو کپیلو کی جانب سے اطالوی براڈ کاسٹ کو دیے گئے انٹرویو پر بھی بات ہوئی۔‘

بیان کے مطابق ایک گھنٹے کی ملاقات کے بعد فیبیو کپیلو کا استعفٰی منظور کرلیا گیا جس کے بعد وہ انگلینڈ کی ٹیم کے مینیجر کی حیثیت سے فوری طور پر سبکدوش ہوجائیں گے۔

فٹبال ایسوسی ایشن کے چیئرمین ڈیوڈ برنسٹین نے کہا ’ہم نے فیبیو کا استعفٰی منظور کرلیا اور اس بات سے اتفاق کیا کہ یہ ایک درست فیصلہ ہے۔ ہم فیبیو کا انگلینڈ کی ٹیم کے لیے کام کرنے کا شکریہ ادا کرنا چاہتے ہیں اور مستقبل میں ان کے لیے نیک خواہشات رکھتے ہیں۔‘

فیبیو کپیلو نے اتوار کو اپنے انٹرویو میں اٹلی کے سرکاری براڈ کاسٹ آر اے آئی کو اپنے انٹرویو میں کہا تھا کہ انہیں یقین نہیں آتا کہ کسی کو کھیلوں کے حکام عدالت کے فیصلے سے پہلے ہی سزا سنا دیں۔

’میرے خیال میں جان ٹیری کا کپتان اپنے منصب پر برقرار رہنا درست تھا۔ میں نے فٹبال ایسوسی ایشن کے چیئرمین سے بات کی تھی اور ان سے کہا تھا کہ میرے خیال میں کسی کو اس وقت تک سزا نہیں دی جانی چاہیے جب تک ایک سول کورٹ اس نتیجے پر نہ پہنچ جائے کہ جان ٹیری پر لگائے جانے والے الزامات درست ہیں یا نہیں۔‘

فٹبال ایسوسی ایشن کے چیئرمین اور کلب انگلینڈ مینیجمنٹ ٹیم جمعرات کو ویمبلے سٹیڈیم میں جمعرات کو نیوز کانفرنس کریں گے۔ اس سے قبل فٹ بال ایسوسی ایشن مزید کوئی بیان نہیں دے گی۔

انگلینڈ کی ٹیم کے کپتان جان ٹیری کو ان کے عہدے سے اس لیے ہٹایا گیا تھا کیونکہ ان پر ایک واقعہ میں نسلی مغلظات استعمال کرنے کا الزام ہے اور اس سلسلے میں ان کو جولائی میں مقدمہ کا سامنا بھی ہے۔

ٹیری ماضی میں بھی کپتانی سے ہٹائے جا چکے ہیں اور انہوں نے اپنے اوپر لگائے جانے والے الزامات سے انکار کیا ہے۔

فٹبال ایسوسی ایشن نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ٹیری انگلینڈ کی ٹیم کے اس وقت تک کپتان نہیں رہ سکتے جب تک ان کے خلاف عائد کیے جانے والے الزامات کا معاملہ حل نہیں ہوجاتا۔

اسی بارے میں