محمد عامر کی اصلاحی ویڈیو جاری

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے پاکستانی فاسٹ بولر محمد عامر کی ایک ویڈیو جاری کی ہے جس میں انہوں نے کرکٹرز کو کرپشن سے بچنے کی تلقین کی ہے۔

محمد عامر کا تقریباً ساڑھے پانچ منٹ کا یہ ویڈیو انٹرویو آئی سی سی کی ویب سائٹ پر ہے جو آئی سی سی کے اینٹی کرپشن اینڈ سکیورٹی یونٹ کے ایجوکیشن پروگرام کا حصہ ہے۔

محمد عامر کا کہنا ہے کہ کرکٹرز کو وہ غلطی نہیں کرنی چاہیے جو ان سے سرزد ہوئی۔

ان کے مطابق آئی سی سی ٹریبونل کی سماعت کے دوران وہ جانتے تھے کہ وہ جھوٹ بول رہے ہیں لیکن وہ دباؤ کا شکار تھے اور ان میں سچ کہنے کا حوصلہ نہیں تھا تاہم لندن کی عدالت کےسامنے انہوں نے فیصلہ کرلیا تھا کہ وہ سچ کہیں گے۔

نامہ نگار عبدالرشید شکور کے مطابق ویڈیو میں محمد عامر کا کہنا ہے کہ ’اگر کسی کرکٹر سے کوئی مشکوک شخص رابطہ کرنے کی کوشش کرتا ہے تو اسے چاہیے کہ وہ اپنی منیجمنٹ اور آئی سی سی کو فوراً اس کی اطلاع دے‘۔

محمد عامر کا کہنا تھا کہ اگر وہ ایسا کرلیتے تو آج پاکستان کی طرف سے انٹرنیشنل کرکٹ کھیل رہے ہوتے لیکن انہوں نے بے وقوفی کی جس کی وجہ سے ان کا کیریئر تباہ ہوگیا۔

واضح رہے کہ محمد عامر سپاٹ فکسنگ مقدمے میں تین ماہ کی جیل کاٹنے کے بعد رہا ہوچکے ہیں۔ اسی مقدمے میں ان کے دیگر دو ساتھیوں سلمان بٹ اور محمد آصف کو بھی سزا ہوئی ہے اور وہ اس وقت لندن کی جیل میں ہیں۔

محمد عامر پر سپاٹ فکسنگ میں ملوث ہونے کی پاداش میں آئی سی سی ٹریبونل بھی پانچ سال کی پابندی کی سزا عائد کر چکا ہے۔

محمد عامر کو رہائی کے بعد آئی سی سی کی ہدایات اور رہنمائی کی روشنی میں بحالی پروگرام سے گزرنا ہوگا جو پاکستان کرکٹ بورڈ کے تحت ہوگا۔

متعدد سابق کرکٹرز جن میں راہول ڈراوڈ، وسیم اکرم عمران خان اور وقاریونس قابل ذکر ہیں محمد عامر سے اظہار ہمدردی کرتے ہوئے ان کی بین الاقوامی کرکٹ میں واپسی کی آواز بلند کر چکے ہیں تاہم انگلینڈ کے کرکٹرز کی رائے یہ ہے کہ کرپشن میں ملوث کرکٹرز کےلئے کرکٹ میں کوئی جگہ نہیں ہونی چاہئے۔

اسی بارے میں