روسی ٹیم کے شائقین کی حرکات پر کارروائی

روس کے کھلاڑی گول کرتے ہوئے تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption روسی ٹیم کے حامیوں کے ایک گروہ پر نسل پرستی کا بھی الزام ہے

یورپی فٹبال کے نگران ادارے نے روس کے خلاف یورپی فٹبال کپ کے پہلے میچ کے دوران اس کی ٹیم کے کچھ حامیوں کی حرکات کی وجہ سے انکوائری شروع کر دی ہے۔

پولینڈ میں جمعہ کو روس اور چیک ریپبلک کے درمیان میچ کے بعد جس میں روس نے ایک چار سے کامیابی حاصل کی تھی روسی ٹیم کے کچھ حمایتیوں کو سٹیڈیم میں ملازمین ٹانگیں اور گھونسے مارتے دیکھا گیا ہے۔ یہ منظر کیمرے پر ریکارڈ ہو گئے ہیں۔

چار ملازمین کو بعد میں ہسپتال لے جانا پڑا۔ نسل پرستی پر مبنی حرکات پر نظر رکھنے والے حکام نے یہ بھی بتایا کہ روسی ٹیم کے حمایتیوں کا ایک گروہ چیک ریپبلک کی ٹیم کے واحد سیاہ فام کھلاڑی تھیوڈور سلیسی پر جملے کستا رہا۔

یورپی فٹبال کے نگران ادارے کے سربراہ پیارا پاور نے کہا کہ ادارہ کی اس طرح کے رویے کے خلاف سخت کارروائی کرنے کی پالیسی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان پالیسی ہے کہ ’تین باریاں پھر باہر‘ جس کا مطلب ہے جرمانہ، جرمانہ اور پھر زیادہ بڑی کارروائی جو ٹیم کو ٹورنامنٹ سے باہر کرنا بھی ہو سکتی اور یا پھر ان کے میچ بند سٹیڈیم میں منعقد کروانا۔

اسی بارے میں