دانش کنیریا مجرم، آئی سی سی نے توثیق کر دی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

بین الاقومی کرکٹ کھیلنے والے ممالک نے پاکستان کے سابق کھلاڑی دانش کنیریا کو کرپشن کے الزامات کے تحت انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کی جانب سے لگائی جانے والی تاحیات پابندی کے فیصلے کی توثیق کر دی ہے۔

انٹرنیشل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) بورڈ کا کہنا ہے کہ کرکٹ کی مقامی باڈیز ان پابندیوں کو تسلیم کرنے کے ساتھ ساتھ ان کا احترام کریں۔

آئی سی سی نے بدھ کو کوالالمپور میں ہونے والے اجلاس میں اصولی طور پر فیصلہ کیا کہ انگلش کرکٹ بورڈ کی جانب سے پاکستانی سپنر پر عائد کی جانے والی پابندی پر پوری دنیا میں عملدرآمد کیا جائے۔

آئی سی سی کا کہنا ہے کہ کرکٹ کھیلنے والے تمام ممالک ان پابندیوں کو تسلیم کرتے ہوئے ان کا احترام کریں۔

واضح رہے کہ انگلش کرکٹ بورڈ نے پاکستان کے لیگ سپنر دانش کنیریا کو ایسیکس کے کھلاڑی مرون ویسٹفیلڈ کو سپاٹ فکسنگ پر اکسانے کے دو الزامات میں مجرم قرار دیا تھا۔

ایسیکس کے سابق کھلاڑی مروِن ویسٹفیلڈ کو سپاٹ فکسنگ کے الزام میں عدالت نے چار ماہ جیل کی سزا سنائی تھی۔

اس کیس کا تعلق سنہ دو ہزار نو میں ایسیکس اور درہم میں ہوئے میچ سے ہے جس میں ویسٹفیلڈ نے جان بوجھ کر خراب بالنگ کروائی تھی۔

پاکستانی ٹیم کے سابق لیگ سپنر دانش کنیریا نے ان الزامات کی تردید کی تھی کہ وہ کھلاڑیوں کو سپاٹ فکسنگ پر اکساتے تھے۔لیکن ای سی بی کے مطابق اس بات میں کوئی شک نہیں کہ کنیریا نے ویسٹفیلڈ کو سپاٹ فکسنگ پر اکسایا تھا۔

دانش کنیریا کو سنہ دو ہزار نو میں ایک کاؤنٹی میچ میں سپاٹ فکسنگ کے الزام میں گرفتار کیاگیا تھا لیکن پولیس نے ناکافی ثبوت ہونے کی بنا کر انہیں رہا کر دیا تھا۔

سنہ دو ہزار سے دو ہزار دس کے دوران پاکستان کی جانب سے اکسٹھ ٹیسٹ اور اٹھارہ ایک روزہ میچ کھیلنے والے دانش کنیریا کو ناکافی ثبوت کی وجہ سے پولیس کی جانب سے کبھی بھی مجرم نہیں ٹھہرایا گیا۔

اسی بارے میں