بولٹ کو دو سو میٹر ٹرائلز میں بھی شکست

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption بائیس سالہ بلیک اور پچیس سالہ یوسین دنیا کے تیز رفتار ترین افراد میں سے ہیں

جمیکا سے تعلق رکھنے والے اولمپک چیمپیئن یوسین بولٹ کو اولمپکس مقابلوں کے ٹرائلز کے دوران اڑتالیس گھنٹے میں دوسری مرتبہ شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

بولٹ کو سو میٹر دوڑ کے ٹرائلز میں ہرانے والے یوہان بلیک نے ہی انہیں دو سو میٹر کے ٹرائلز میں بھی شکست دے دی۔

یوہان بلیک نے اپنی دوڑ انیس اعشاریہ آٹھ صفر سیکنڈ میں مکمل کی جو کہ یوسین سے اعشاریہ صفر تین سیکنڈ کم تھی۔

اس شکست کے بعد یوسین بولٹ نے کہا کہ وہ اپنی غلطیوں پر غور کریں گے اور انہیں بہتر بنانے پر کام کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ ان میں کمزوریاں تھیں اور اب وہ لندن 2012 سے پہلے لازماً ان کمزوریوں پرمحنت کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ’میں اولمپک چیمپیئن ہوں۔ مجھے دنیا کو دکھانا ہوگا کہ میں سب سے بہتر ہوں۔ سو میں توقع کرتا ہوں کہ میں کھیل میں واپس آؤں جس کے لیے مزید تین ہفتے کافی ہوں گے‘۔

یوسین بولٹ اس وقت سو میٹر اور دو سو میٹردوڑ کے عالمی اور اولمپک چیمپیئن ہیں اور انہوں نے بیجنگ اولمپکس میں چار ضرب سو میٹر کی ریلے دوڑ بھی جیتی تھی۔

یوسین کے کوچ گلین ملز نے کہا کہ وہ ان کی کارکردگی سےمطمئن ہیں اور اولمپکس تک یوسین اپنی صلاحیت بہتر کرنے کے قابل ہوجائیں گے۔

یوہان بلیک اس کامیابی پر بولٹ کے شکرگزار نظر آئے۔ انہوں نے کہا کہ ’یوسین ہمیشہ میری حوصلہ افزائی کرتے رہے اور مجھ پر زور دیتے رہے کہ میں دوڑ میں واپس آتا رہوں‘۔

بائیس سالہ بلیک اور پچیس سالہ یوسین دنیا کے تیز رفتار ترین افراد میں سے ہیں اور ان کے مابین دوڑ لندن 2012 کے نمایاں مقابلوں میں سے ایک ہوگی۔

اسی بارے میں