فٹبال کھلاڑیوں کے تبادلوں میں کمی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption فٹبال کھلاڑی دنیا کے مہنگے ترین کھلاڑیوں میں شمار ہوتے ہیں۔

عالمی فٹبال کی منتظم فیفا کے مطابق گزشتہ چھ ماہ کے دوران مختلف فٹبال کلبوں کے درمیان کھلاڑیوں کے تبادلوں کی تعداد اور کھلاڑیوں کے معاوضوں میں کمی دیکھنے کو ملی ہے۔

کھلاڑیوں کی خرید و فروخت کے طے پانے والے معاہدوں کی تعداد میں بھی نو فیصد کمی ہوئی۔ ان معاہدوں کی مجموعی قدر بھی چونتیس فیصد گری۔

اس سال دنیا بھر کے چار ہزار نو سو تہتر تبادلوں سے مجموعی آمدنی پانچ سو چھہتر ملین ڈالر رہی۔

اس کمی کی وجہ عالمی اقتصادی مسائل کے علاوہ یورپی فٹبال کلبوں کی تنظیم یوئیفا کی جانب سے متوقع نئے مالیاتی قوانین بتائی جاتی ہے۔

یہ اطلاعات فیفا کے ’ٹرانسفر میچنگ سسٹم‘ کی جانب سے دی گئیں جو کہ جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے بین الاقوامی فٹبال میں کھلاڑیوں کے تبادلوں کو شفاف اور ان میں قوانین سے مطابقت پیدا کرتا ہے۔

فیفا کے ’انٹیگریٹی اینڈ کمپلائنس‘ ڈپارٹمنٹ کی سربراہ ازابیل سولال کا کہنا تھا کہ جب یورپ میں جولائی اور اگست کے دوران تبادلے شروع ہوں گے تب ہم اس معاملے پر زیادہ صحیح نتائج تک پہنچ سکیں گے۔

انہوں نے مزید کہا ’اگر مجھ سے ذاتی طور پر پوچھا جائے تو میں کہوں گی کہ اس کی وجوہات اقتصادی بحران اور یوئیفا کے متوقع مالیاتی قوانین ہی ہیں‘۔

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مختلف کلب آج کل اپنے مالیاتی معاملات درست کرنے کی کوشش کر رہے ہیں اور آئندہ ستمبر تک حالات واضح ہو جائیں گے۔

ان اعداد و شمار میں وہ تبادلے شامل نہیں ہیں جو کہ ایک ہی ملک کے دو کلبوں کے مابین ہوئے اور ان میں صرف بین الاقوامی تبادلوں کو گنا گیا ہے۔

یوئیفا کے متوقع قوانین کے مطابق کلب اپنے کھلاڑیوں پر صرف وہی رقم خرچ سکیں گے جو کہ انہوں نے مختلف ذرائع سے کمائی ہو اور قرضوں سے حاصل کردہ رقوم یا کلبوں کے مالکان کی جانب سے دی گئی ذاتی رقوم، کھلاڑیوں کو خریدنے کے لیے استعمال نہیں کی جا سکیں گی۔

یورپ کی پانچ بڑی فٹبال لیگوں انگلینڈ، جرمنی، فرانس، اٹلی اور سپین میں کھلاڑیوں کے تبادلے پہلی جولائی سے اکتیس اگست تک کیے جاتے ہیں۔

اسی بارے میں