مرے فائنل میں، مقابلہ فیڈرر سے ہو گا

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

برطانوی ٹینس کھلاڑی اینڈی مرے جو ولفرائیڈ سونگا کو ومبلڈن کے سیمی فائنل میں شکست دے کر فائنل میں پہنچ گئے ہیں۔

ومبلڈن کے فائنل میں اینڈی مرے کا مقابلہ اتوار کے روز سولہ بار گرینڈ سلیم حاصل کرنے والے راجر فیڈرر سے ہو گا۔

اینڈی مرے 74 سال بعد پہلے برطانوی کھلاڑی ہیں جو ومبلڈن کے فائنل میں پہنچے ہیں۔ سنہ انیس سو چھتیس میں برطانوی کھلاڑی فریڈ پیری نے ومبلڈن جیتا تھا۔

اینڈی نےسونگا کو چھ تین، چھ چار، تین چھ اور سات پانچ سے شکست دی۔ یہ مقابلہ دو گھنٹے سینتالیس منٹ جاری رہا۔

سوئس کھلاڑی سونگا کو ہرانے کے بعد اینڈی نے کہا ’میں کافی مطمئین ہوں۔ یہ ایک بہت سخت مقابلہ تھا اور ہم دونوں ہی کو مواقعے ملے تھے۔‘

اس سے قبل سوئٹزر لینڈ کے ٹینس سٹار راجر فیڈرر نے مردوں کے ومبلڈن چیمپئین شپ کے سیمی فائنل میں دفاعی چیمپیئن سربیا کے نواک یوکووِچ کو ہرا کر فائنل کے لیے کوالیفائی کر لیا ہے۔ یہ فیڈرر کا آٹھواں ومبلڈن فائنل ہو گا۔

فیڈرر نے یوکووچ کو ہرا کر ومبلڈن ٹورنامنٹ میں تاریخ رقم کی ہے۔ وہ ٹینس کے پہلے کھلاڑی ہیں جو اپنا آٹھواں ومبلڈن فائنل کھیلیں گے۔

فیڈرر نےسیمی فائنل میں یوکووِچ کو چھ تین، تین چھ، چھ چار اور چھ تین سے شکست دی۔

فیڈرر نے پہلا سیٹ چھ تین سے جیتا جبکہ دوسرے سیٹ میں جاکووچ نے چھ تین سے کامیابی حاصل کر کے مقابلہ ایک ایک سے برابر کر دیا۔

فیڈرر نے تیسرے سیٹ میں عمدہ کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے یوکووچ کو چھ چار سے شکست دی۔

میچ کے چوتھے سیٹ میں بھی فیڈرر نے یوکووچ کو سنھبلنے کا موقع نہ دیا اور چھ تین کے فرق سے یہ سیٹ جیت لیا۔

فیڈرر نے دو گھنٹے اور انیس منٹ کے مقابلے کے بعد یہ میچ جیتا۔

اگر فیڈرر فائنل جیتنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں تو یہ ان کا ساتواں ومبلڈن ٹائٹل ہو گا۔

اسی بارے میں