سعودی کھلاڑی حجاب کے بغیر مقابلہ کریں گی

Image caption سعودی عرب نے پہلی مرتبہ دو خاتون کھلاڑیوں کو اولمپکس میں حصہ لینے کے لیے بھیجا ہے

انٹرنشینل جوڈو فیڈریشن نے کہا ہے کہ اولمپکس کے جوڈو مقابلوں میں سعودی عرب کی کھلاڑی بغیر حجاب کے مقابلے میں حصہ لے گی۔

جوڈو فیڈریشن کی صدر میریس وائزر نے کہا کہ سعودی کھلاڑی ودجان علی سراج عبد الرحیم شاہ خانی جوڈو مقابلے کے دوران ایسا حجاب پہنیں جس سے ان کا سر تو ڈھانپا ہوگا لیکن منہ نہیں۔

جوڈو ایسوسی ایشن نے نقاب پہننے کی پابندی حفاظتی اقدامات کے تحت لگائی ہے۔

سعودی عرب روایتی طور پر صرف مرد ایتھلیٹوں کو ہی اولمپکس میں بھیجتا رہا ہے۔ سعودی عرب نے پہلی بار لندن اولمپکس کے لیے دو خاتون اتھیلیٹ بھیجی ہیں جن میں ایک جوڈو اور ایک آٹھ سو میٹر کی دوڑ میں حصہ لیں گی۔

انٹرنیشنل جوڈو فیڈریشن کی صدر نے کہا کہ سعودی عرب سے تعلق رکھنے والی کھلاڑی جوڈو کے کھیل کی روح اور بنیادی اصولوں کو مدنظر رکھتے ہوئے اس میں حصہ لے گی۔

سعودی عرب میں خواتین کی کھیلوں میں حصہ لینے کی کوئی روایت نہیں ہے۔

سعودی حکام کا کہنا ہے کہ کھلاڑیوں کو مقابلوں میں ایسا لباس زیب تن کرنا ہوگا جس سے ان کا وقار متاثر نہ ہو۔