سعودی جوڈو کھلاڑی کو سر ڈھانپنے کی اجازت

Image caption وجدان علی سراج عبدالرحیم شہرکانی کی عمر سولہ سال ہے

عالمی جوڈو فیڈریشن نے سعودی عرب کی خاتون جوڈو کھلاڑی وجدان علی شہرکانی کو اولمپکس کے دوران سر ڈھانپ کر مقابلوں میں شرکت کی اجازت دے دی ہے۔

سولہ سالہ وجدان نے جمعہ کو اٹھہتر کلو گرام درجہ بندی کے مقابلوں میں حصہ لینا ہے۔

انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی کے ایک ترجمان کا کہنا ہے کہ ’جوڈو فیڈریشن انہیں سر پر ایسا کچھ پہننے کی اجازت دے گی جس سے انہیں نقصان پہنچے کا اندیشہ نہیں ہوگا اور میرا خیال ہے کہ ایشیا میں ہونے والے مقابلوں میں ایسا کچھ استعمال ہوتا ہے‘۔

عالمی جوڈو فیڈریشن نے ابتدائی طور پر کہا تھا کہ انہیں حجاب کے بغیر مقابلے میں حصہ لینا ہو گا اور جوڈو میں حفاظتی نقطۂ نظر سے حجاب ممنوع ہے۔

اس پر وجدان کے والد نے کہا تھا کہ ان کی بیٹی صرف اسی صورت میں مقابلوں میں حصہ لےگی کہ اگر اسے حجاب پہننے دیا جائے اور حجاب اتارنے پر اصرار جاری رہا تو وہ اولمپکس سے دستبردار ہو جائے گی۔

ایک سعودی نمائندہ نے کچھ عرصہ قبل کہا تھا کہ ان کی تمام خواتین کھلاڑی اسلامی طرز لباس کی پیروی کریں گیں۔

سعودی عرب نے پہلی بار لندن اولمپکس کے لیے دو خاتون اتھیلیٹ بھیجی ہیں جن میں ایک جوڈو اور ایک آٹھ سو میٹر کی دوڑ میں حصہ لیں گی۔

اسی بارے میں